Thursday, October 29, 2020  | 11 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے عہدے میں 3 سال کی توسیع

SAMAA | - Posted: Aug 19, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Aug 19, 2019 | Last Updated: 1 year ago

وزیراعظم عمران خان نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے عہدے کی مدت میں 3 سال کی توسیع کردی، نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے جنرل قمر جاوید باجوہ کی پاک فوج کی سربراہی کی مدت میں 3 سال کی توسیع کردی۔

وزیراعظم ہاؤس کے مطابق فیصلہ ملک اور خطے میں جاری امن کی کوششوں کے تسلسل اور موجودہ صورتحال کے پیش نظر کیا گیا۔

مزید جانیے : کشمیر کیلئے آخری فوجی اور آخری گولی تک لڑیں گے،آئی ایس پی آر

جنرل قمر جاوید باجوہ 1960ء میں کراچی میں پیدا ہوئے، نومبر 2016ء میں انہوں نے آرمی چیف کا عہدہ سنبھالا تھا جبکہ ان کے عہدے کی مدت رواں سال نومبر میں پوری ہورہی تھی۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے فوجی کیریئر کا آغاز 24 اکتوبر 1980ء کو 16 بلوچ رجمنٹ سے کیا، وہ کینیڈین فورسز کمانڈ اینڈ اسٹاف کالج ٹورنٹو سے گریجویٹ ہیں، انہوں نے نیول پوسٹ گریجویٹ یونیورسٹی کیلی فورنیا اور نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد سے بھی تعلیم حاصل کی۔

سربراہ پاک فوج نے انفنٹری اسکول کوئٹہ میں انسٹرکٹر کے طور پر فرائض انجام دیئے جبکہ آرمی چیف انفنٹری بریگیڈ کے بریگیڈ میجر اور راولپنڈی کور کے کمانڈر کے عہدوں پر بھی کام کیا، وہ 16 بلوچ رجمنٹ کی قیادت،  انفنٹری بریگیڈ، انفنٹری ڈویژن اور فورس کمانڈ ناردرن ایریاز کے کمانڈر بھی رہ چکے ہیں۔

تفصیلات جانیں : امن پسند ہیں لیکن دھمکیوں سے ڈرنے والے نہيں، آرمی چیف

جنرل قمر جاوید باجوہ کانگو میں اقوام متحدہ کے امن مشن میں بریگیڈ کمانڈر رہے، جنرل قمر جاوید باجوہ کو اگست 2011 کو نشان امتیاز ملٹری کے اعزاز سے نوازا گیا۔

دفاعی تجزیہ کا بریگیڈیئر (ر) حارث نواز کہتے ہیں کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کو بطور آرمی چیف توسیع دینا حکومت کیلئے مناسب ہے، پاک فوج افغان طالبان اور امریکا کے درمیان مذاکرات میں انتہائی اہم کردار ادا کررہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آرمی چیف کی توسیع کے پیچھے نئی دہلی کی جانب سے لائن آف کنٹرول اور مقبوضہ کشمیر میں جارحانہ اقدامات کا بھی کردار ہے۔

یہ بھی پڑھیں : ہم نے مجبوری میں آرمی چیف کو توسیع دی تھی، قمر زمان کائرہ

پاک فوج میں سینیارٹی کی بنیاد پر جنرل قمر جاوید باجوہ کے عہدے کی میعاد پوری ہونے پر جن افسران کے آرمی چیف بننے کا امکان تھا ان میں ڈی جی اسٹریٹیجک کمانڈ ڈویژن لیفٹیننٹ جنرل سرفراز ستار، چیف آف جنرل اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل ندیم رضا، کور کمانڈر کراچی لیفٹیننٹ جنرل ہمایوں عزیز اور کور کمانڈر ملتان نعیم اشرف شامل ہیں۔

پیپلزپارٹی دور میں جنرل (ر) اشفاق پرویز کیانی کو دو بار آرمی چیف کے عہدے پر توسیع دی گئی تھی۔

وزیراعظم عمران خان نے ماضی میں بطور اپوزیشن رہنماء اپنے ایک انٹرویو میں کہا تھا ججز اور جنرلز کو توسیع دینے کی مخالفت کی تھی، ان کا کہنا تھا کہ تمام اداروں کو قوانین کے مطابق ہی چلایا جانا چاہئے۔ وہ کہتے تھے کہ جب آپ کسی شخصیت کیلئے قوانین کو تبدیل کرتے ہیں تو اس کا اثر پورے ادارے پر پڑتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube