Monday, September 28, 2020  | 9 Safar, 1442
ہوم   > Latest

ممکن ہے کہ ہمیں فوجی سطح پر بھی بھارت کا مقابلہ کرنا پڑے،خواجہ آصف

SAMAA | - Posted: Aug 7, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Aug 7, 2019 | Last Updated: 1 year ago

سابق وزیر خارجہ اور ن لیگی رہنما خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ ہم نے تاريخ سے کوئي سبق نہيں سيکھا، یہ انتہائي نازک موڑ ہے، عین ممکن ہے کہ پاکستان کو فوجي سطح پر بھي بھارتی جارحيت کا مقابلہ کرنا پڑے۔ پارلیمنٹ کے مشترکا اجلاس سے خطاب میں سابق وزیر خارجہ اور پاکستان مسلم...

سابق وزیر خارجہ اور ن لیگی رہنما خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ ہم نے تاريخ سے کوئي سبق نہيں سيکھا، یہ انتہائي نازک موڑ ہے، عین ممکن ہے کہ پاکستان کو فوجي سطح پر بھي بھارتی جارحيت کا مقابلہ کرنا پڑے۔

پارلیمنٹ کے مشترکا اجلاس سے خطاب میں سابق وزیر خارجہ اور پاکستان مسلم لیگ ن کے سینیر رہنما خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ ہم نے تاريخ سے کوئي سبق نہيں سيکھا، کشميري اس وقت پوري اسلامي دنيا ميں تنہا ہيں، کشميريوں کي مشکلات ميں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے، بھارت اس ظلم ميں اکيلا نہيں، بلکہ اسرائيل نے يہ سب ہندوستان کو سکھايا ہے۔

خواجہ آصف نے کہا کہ جو ملک معاشي طور پر کمزور ہوجائے اس کا کوئي دوست نہيں رہتا، آپ جہاں جاتے ہيں وہاں سے پيسے مانگتے ہيں، اس وقت ملک کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے، وقت کی ضرورت ہے کہ ہم تقسیم ہونے کے بجائے ایک اواز ہو کر کشمیریوں کیلئے بھرپور کارروائی کریں، انتہائي نازک موڑ پر قوم تقسيم ہے، کشمير کا مسئلہ قوم کے اتحاد کا تقاضا کرتا ہے، یہ وقت تقسیم ہونے کا نہیں ہے۔

بھارتی وزیراعظم نريندر مودی نے امن کے تمام راستے بند کردئيے،شیخ رشید

خواجہ آصف کا مزید کہنا تھا کہ کشميريوں کو ايل او سي کے اس پار دھکيلا جا رہا ہے، کشمير ميں وہي ڈرامہ ہو رہا ہے جو فلسطين ميں رچايا گيا، قوم متحد ہوکر اس جارحيت کا مقابلہ کرے، سفارتي محاذ اور مسلم دنيا کو ساتھ ملا کر مقابلہ کرنا ہوگا، ہماري شہ رگ کشمير اس وقت دشمن کے ہاتھ ميں ہے۔

انہوں نے کہا کہ دو دن کي بحث سے مسئلے کا حل نہيں ملے گا، فوجي سطح پر بھي اس جارحيت کا مقابلہ کرنا پڑسکتا ہے، يہ معاملہ صرف قرارداد کي حد تک ختم نہيں ہونا چاہيے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube