قبائلی اضلاع انتخابات، آزاد امیدواروں نے میدان مار لیا، پی ٹی آئی کا دوسرا نمبر

July 21, 2019

خیبر پختونخوا میں ضم شدہ قبائلی اضلاع میں ہونے والے انتخابات میں آزاد امیدواروں نے میدان مار لیا جبکہ حکومتی جماعت تحریک انصاف دوسرے نمبر پر رہی۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ غیر حتمی و غیر سرکاری نتائج کے مطابق آزاد امیدواروں نے 6 اور پی ٹی آئی نے 5 نشستوں میں کامیابی حاصل کی۔

جمعیت علماء اسلام (ف) کے حصے میں 3 جبکہ جماعت اسلامی اور عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کا ایک ایک امیدوار صوبائی اسمبلی کا رکن منتخب ہوا۔

الیکشن کمیشن کی قبائلی اضلاع میں پرامن انتخابات پر عوام کو مبارکباد

اپوزیشن کی دونوں بڑی جماعتوں مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی کوئی نشست جیتنے میں کامیاب نہ ہو سکیں۔

قبائلی اضلاع میں کامیابی کے بعد صوبائی اسمبلی میں تحریک انصاف کے اراکین کی تعداد 83 سے بڑھ کر 88 جبکہ آزاد اراکین کی تعداد 6 سے بڑھ کر 12 ہوگئی۔

قبائلی انتخابات میں آزاد ارکان کی جیت پی ٹی آئی کی جیت ہے، فردوس عاشق

ایک حلقے میں کامیابی سے اے این پی کے اراکین بارہ جبکہ تین سیٹوں میں اضافے سے جے یو آئی اراکین 15 ہو جائیں گے۔

صوبائی اسمبلی میں جماعت اسلامی کی دو نشستیں ہوگئیں جبکہ مسلم لیگ ن کے 6 اور پیپلزپارٹی کے 5 اراکین اسمبلی میں اپنی پارٹی کی نمائندگی کرتے ہیں۔

جیتنے والے امیدواروں کی تفصیلات

آزاد امیدوار

پی کے 104 مہمند ٹو سے عباس رحمن

پی کے105 خیبر وَن سے شفیق آفریدی

پی کے 106 خیبر ٹو سے بلاول آفریدی

پی کے 107 خیبر تھری سے حمد شفیق خان

پی کے 110 اورکزئی سے سید غازی غزن جمال

پی کے 112 شمالی وزیرستان ٹو سے میر کالام خان

پاکستان تحریک انصاف

پی کے 100 باجوڑ وَن سے انور زیب خان

پی کے 101 باجوڑ ٹو سے اجمل خان

پی کے 109 کرم ٹو سے سید اقبال میاں

پی کے 111 شمالی وزیرستان وَن سے محمد اقبال خان

پی کے 114 جنوبی وزیرستان ٹو سے نصر اللہ خان۔

جمعیت علمائے اسلام

پی کے 115 فرنٹیر ریجن سے شعیب خان

پی کے 108 کرم وَن سے محمد ریاض

پی کے 113 جنوبی وزیرستان سے حافظ آسام الدین

عوامی نیشنل پارٹی

پی کے 103 مہمند ون سے نثار مہمند

جماعت اسلامی

پی کے 102 باجوڑ تھری سے سراج الدین