ہوم   > Latest

قبائلی اضلاع میں پولنگ کا وقت ختم، ووٹوں کی گنتی شروع

SAMAA | , , and - Posted: Jul 20, 2019 | Last Updated: 10 months ago
Posted: Jul 20, 2019 | Last Updated: 10 months ago

خیبر پختونخوا میں ضم ہونے والے قبائلی علاقوں میں تاریخی انتخابات کیلئے پولنگ کا وقت ختم ہونے پر ووٹوں کی گنتی شروع ہوگئی ہے۔ پولنگ کا وقت صبح 8 بجے سے شام 5 بجے تک تھا۔ سات اضلاع میں سب سے کانٹے کا مقابلہ باجوڑ میں متوقع ہے، جہاں اے این پی، پی ٹی آئی...

خیبر پختونخوا میں ضم ہونے والے قبائلی علاقوں میں تاریخی انتخابات کیلئے پولنگ کا وقت ختم ہونے پر ووٹوں کی گنتی شروع ہوگئی ہے۔ پولنگ کا وقت صبح 8 بجے سے شام 5 بجے تک تھا۔

سات اضلاع میں سب سے کانٹے کا مقابلہ باجوڑ میں متوقع ہے، جہاں اے این پی، پی ٹی آئی اور جمیعت علمائے اسلام کی جانب سے امیدواروں کو میدان میں اتارا گیا ہے۔ قبائلي عوام شام پانچ بجے تک ووٹ ڈال سکيں گے۔ دو سو پچیاسی میں سے دو سو امیدوار آزاد حیثیت سے قسمت آزمائی کر رہے ہيں۔ دو خواتین بھی الیکشن کی دوڑ میں شامل ہیں۔ سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات پاک فوج، ايف سي اور پوليس کے سپرد ہیں۔

پوليس اسٹيشنز کے اندر اور باہر بھی اہل کار تعينات کیے گئے ہیں۔ اٹھارہ سوستانوے پولنگ اسٹیشنز ميں سے چار سو اکسٹھ پولنگ اسٹیشنز حساس اور پانچ سو چون کو انتہائی حساس قرار ديا گيا ہے۔ حساس پولنگ اسٹیشنز پر سیکیورٹی کیمرے بھی نصب کیے گئے ہیں۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ قبائلي عوام پہلي بار اپنا حق رائے دہي استعمال کررہے ہيں۔ سياسي جماعتوں ميں پي ٹي آئي کے سب سے زيادہ سولہ، جے يو آئي ف کے پندرہ، اے اين پي چودہ اور پيپلز پارٹي کے تيرہ اميدوار ميدان ميں ہيں۔ جماعتِ اسلامي تيرہ حلقوں سے، جب کہ مسلم ليگ ن پانچ اور قومي وطن پارٹي بھي تين نشستوں سے اليکشن لڑ رہي ہے۔ پی ایس پی اور جے یو آئی س نے بھی دو دو امیدوار کھڑے کیے ہیں۔

سات اضلاع کیلئے دو خواتین ناہيد آفريدي اور ملاسا بي بي بھی الیکشن کی دوڑ میں شامل ہيں۔ پي کے ايک سو چھ خيبر سے اين پي نے سماجي کارکن ناہيد آفريدي اور پي کے ايک سو آٹھ کرم سے جماعتِ اسلامي نے ملاسا بي بي کو ٹکٹ ديے ہيں۔ اٹھائیس لاکھ رجسٹرڈ ووٹرز میں سے گیارہ لاکھ تیس ہزار خواتین ووٹرز ہیں۔ قبائلي علاقوں ميں ہونے والے انتخابات ميں رجسٹرڈ ووٹرز کي تعداد اٹھائيس لاکھ ہے، ان ميں سولہ لاکھ ستر ہزار مرد، جب کہ گيارہ لاکھ تيس ہزار خواتين ووٹرز ہيں۔

ڈیرہ اسماعیل خان

ڈیرہ اسماعیل خان میں پی کے115 سابق 6ایف آرز پر مشتمل حلقے میں کل پولنگ اسٹیشن کی تعداد163 ہیں، یہاں مردوں کے13،خواتین کے13 پولنگ اسٹیشنز قائم ہیں، جب کہ 137 مشترکا پولنگ اسٹیشنز بنائے گئے ہیں۔ سابق چھ ایف آرز پر مشتمل پی کے 115 میں حساس اور حساس ترین پولنگ اسٹیشنز کی تعداد ہے۔ پی کے115میں مجموعی طور پر پولنگ اسٹیشنز کی تعداد 163 ہے۔ حلقے میں حساس پولنگ اسٹیشنز کی تعداد 26 ہے۔ حلقے میں حساس ترین پولنگ اسٹیشنز کی تعداد81 جب کہ 56پولنگ اسٹیشنز نارمل قرار دیئے گئے ہیں۔ پی کے115 سابق ایف آرز میں مجموعی طور پر ووٹرز کی تعداد1 لاکھ91 ہزار62 ہیں۔ مرد ووٹرز کی تعداد1 لاکھ16 ہزار444 ہیں۔ 74 ہزار618 خواتین ووٹرز ہیں۔

ڈیرہ اسماعیل خان میں سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ ووٹرز کو باقاعدہ سرچ کرنے کے بعد پولنگ اسٹیشنز میں داخل ہونے کی اجازت دی جاتی ہے۔

میران شاہ

ميران شاہ کے حلقے پي کے ايک سو گيارہ ميں پولنگ کا عمل جاری ہے۔ آزاد اميدوار مير کلام اور جے يو آئي کے مفتي صديق اللہ اور پي ٹي آئي ملک اورنگزيب ميں سخت مقابلہ متوقع ہے۔ سيکيورٹي کے فول پروف انتظامات کيے گئے ہيں۔ پاک فوج، ايف سي اور پوليس کے جوان سيکيورٹي پر تعينات ہيں۔

خیبر

تاريخ ميں پہلي بار ضم شدہ قبائلي اضلاع ميں صوبائي اسمبلي کي سولہ نشستوں پر انتخابات جاری ہیں، جو بلا تعطل شام پانچ بجے تک جاری رہیں گے۔ پي کے ايک سو چھ جمرود ميں پي ٹي آئي کے اميدوار امير احمد کا آزاد اميدوار بلال آفريدي سے سخت مقابلہ متوقع ہے۔ حلقے ميں سيکيورٹي کے فول پروف انتظامات کيے گئے ہيں۔ پاک فوج، ايف سي اورپوليس اہلکار سیکیورٹی کے فرائض سرانجام دے رہے ہيں۔

مہمند

ضلع مہمند پي کے ايک سو تين اور ايک سو چار ميں پولنگ کا عمل جاری ہے۔ پي ٹي آئي کے رحيم شاہ اور جے يو آئي (ف) کے گلاب اور اے اين پي کے نثار احمد کے درميان کانٹے کا متوقع ہے۔ پاک فوج، ايف سي اور پوليس اہلکار سيکيورٹي کے فرائض انجام ديں گے۔

اورکزئی

پی کے 110 اورکزئی کیلئے کوہاٹ میں 23 پولنگ اسٹیشن قائم کیے گئے ہیں۔ اورکزئی کے آئی ڈی پیز کے لیے کوہاٹ میں ہی پولنگ اسٹیشن قائم کیے گئے ہِیں۔ اورکزئی کے حلقہ پی کے 110 میں ووٹرز کو لے جانے والی گاڑی کھائی میں گرنے سے ایک شخص جاں بحق جبکہ 6 افراد زخمی ہوگئے جنھیں قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

لکی مروت، پی کے 115 ٹرائبل سب ڈویژن الیکشن

لکی مروت کے حلقہ پی کے 115 کے علاقے ٹرائبل سب ڈویژن بیٹنی میں پولنگ کا عمل جاری ہے۔ دن کے آغاز سے ہی پولنگ اسٹیشنز کے سامنے ووٹرز کی لمبی قطاریں لگ گٸیں۔ سب ڈویژن بیٹھنی میں ٹوٹل ووٹرز کی تعداد 14808 ہے۔ علاقے میں ٹوٹل پولنگ سٹیشنز کی تعداد 10 ہے۔ کل پولنگ بوتھس 22 ہیں، جس میں 12 مردانہ، جب کہ 10 خواتین کیلئے ہیں۔ تمام پولنگ اسٹیشنز انتہائی حساس قرار دیئے گئے ہیں۔ ہر پولنگ اسٹیشن پرپولیس اور خاصہ دار فورس کے جوان تعینات ہیں۔ پاک آرمی کے جوان بھی پولنگ اسٹیشنز میں ڈیوٹی سر انجام دے رہے ہیں۔ اس حلقے میں ٹرائبل سب ڈویژن پشاور، کوہاٹ، بنوں، لکی مروت، ٹانک اور ڈی آئی خان شامل ہیں۔

پارا چنار

پاراچنار کے ضلع کرم کے دو حلقوں میں پولنگ جاری ہے۔ سٹرکٹ الیکشن کمشنر ہمایوں احمد تنویر کے مطابق 266 پولنگ اسٹیشنز میں سات سو کیمرے نصب کئے گئے ہیں، لوگ اپنا ووٹ ڈالنے کے لئے پولنگ اسٹیشنز پہنچ رہے ہیں۔ ڈی سی ضلع کرم شاہ فہد کا کہنا ہے کہ بم ڈسپوزل اسکوارڈ اور سراغ رساں کتوں کے ذریعے پولنگ ا سٹیشنز کو کلیئر کرایا گیا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube