ہوم   >  پاکستان

کراچی میں نرسز کا احتجاج، پولیس کا لاٹھی چارج، متعدد گرفتار، وزیراعلیٰ کا نوٹس

5 months ago

    کراچي ميں نرسز کا احتجاج 15 ویں روز بھی جاری رہا۔ پريس کلب پر دھرنے میں بيٹھي نرسز نے وزيراعليٰ ہاؤس جانے کي کوشش کی تو علاقہ میدان جنگ بن گیا۔ پولیس کی جانب سے نرسز کو روکنے کے لیے واٹر کینن اور آنسو گیس کا استعمال کیا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے ڈی آئی...

 

 

کراچي ميں نرسز کا احتجاج 15 ویں روز بھی جاری رہا۔ پريس کلب پر دھرنے میں بيٹھي نرسز نے وزيراعليٰ ہاؤس جانے کي کوشش کی تو علاقہ میدان جنگ بن گیا۔ پولیس کی جانب سے نرسز کو روکنے کے لیے واٹر کینن اور آنسو گیس کا استعمال کیا گیا۔ وزیراعلیٰ سندھ نے ڈی آئی جی ساؤتھ کو گرفتار نرسز کو رہا کرنے کی ہدایت کردی اور نرسز کے احتجاج پر نوٹس لے لیا۔

کراچی میں ریڈ زون جمعرات کی دوپہر میدان جنگ کا منظر پیش کررہا تھا۔ احتجاج پر بیٹھی نرسز نے پریس کلب سے وزیراعلیٰ ہاؤس جانے کی کوشش کی تو پولیس نے بزور طاقت انھیں روکنا چاہا۔

پولیس کی جانب سے مظاہرین پر لاٹھی چارج اور واٹر کينن کا استعمال کیا گیا۔ متعدد مظاہرین کو پولیس نے گرفتار کرلیا۔ گرفتار ہونے والوں ميں نرسز الائنس کے سربراہ بھی شامل تھے۔

پولیس نے وزيراعليٰ ہاؤس کے قريب بيريئرز لگاديے تاکہ مظاہرین مزید آگے نہ جاسکیں۔ پاکستان تحریک انصاف کی رکن سندھ اسمبلی دعا بھٹو بھي مظاہرے ميں موجود تھیں۔ احتجاج کرنے والی نرسز کا مطالبہ تھا کہ ان کی تنخواہ ديگر صوبوں کے برابر کی جائے اور سروسز اسٹرکچر بحال کیا جائے۔

احتجاج کے دوران شاہین کمپلیکس،پی آئی ڈی سی اور اطراف کے علاقوں میں گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں۔ شاہین کمپلیکس اور ضیا الدین روڈ کے ہر قسم کے ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔

وزیراعلیٰ سندھ نے ڈی آئی جی ساؤتھ کو گرفتار نرسز کو رہا کرنے کی ہدایت کردی اور نرسز کے احتجاج پر نوٹس لے لیا۔

 وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ سیکریٹری صحت نرسز کے مسائل فوری حل کریں۔ وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ سیکریٹری ہيلتھ سے معاملات طے ہوگئے تھے تو احتجاج کا جواز نہیں بنتا تھا، ایک سیاسی جماعت نرسز کے معاملات کو سیاسی رنگ دینا چاہتی ہے۔

 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں