ریکوڈک کیس میں پاکستان پر جرمانہ،وزیراعظم کا تحقیقات کے لیے کمیشن بنانے کا حکم

July 14, 2019

ریکوڈک کیس میں عالمی بینک ٹریبونل نے  پاکستان پر 5 ارب 97 کروڑ ڈالرز کا جرمانہ عائد کیا تو وزیراعظم عمران خان نے معاملے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ۔

اٹارنی جنرل آفس سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ ریکوڈک کیس پر وزیراعظم نے اس معاملے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔ اعلیٰ سطح کا کمیشن کیس کی تحقیقات کرے گا۔

اٹارنی جنرل آفس کی جانب سے مزید بتایا گیا ہے کہ کمیشن تعین کرے گا کہ پاکستان اس صورتحال تک کیسے پہنچا جبکہ کمیشن ریکوڈک معاملے میں ذمہ داران کا تعین بھی کرے گا۔

واضح رہے کہ عالمی بینک کے سرمایہ کاری سے متعلق ثالثی ٹریبونل کا جاری کردہ فیصلہ پاکستان کو موصول ہوگیا ہے، پاکستان ہرجانے کے فیصلے کو چیلنج کرے گا۔

عالمی بینک کے انٹرنیشنل سینٹر فار سیٹلمنٹ آف انویسٹمنٹ ڈسپیوٹس ( آئی سی ایس آئی ڈی) نے ٹیتھیان کاپر کمپنی کے دعوے پر ریکوڈک کیس میں حکومت پاکستان کوتقریباً 5.8 ارب ڈالر ہرجانے کا فیصلہ سنایا۔

آئی سی ایس آئی ڈی کے عائد کردہ ہرجانے کی رقم پاکستان کو چلی اور کینیڈا کی مائننگ کمپنی ٹیتھیان کو ادا کرنا ہوگی۔

پاکستان کی حکومت کو معاہدے کی پاسداری نہ کرنے پر 4ارب ڈالر ہر جانہ جبکہ سود اور دیگر اخراجات کی مد میں پونے 2ارب ڈالر ادا کرنے ہوں گے جو کہ مجموعی طور پر 5.8 ارب ڈالر بنتے ہیں۔