ہوم   > پاکستان

کراچی میں نیب کا چھاپہ ، سندھ بینک کے تین اعلی افسر گرفتار

SAMAA | - Posted: Jul 10, 2019 | Last Updated: 11 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 10, 2019 | Last Updated: 11 months ago

جعلي اکاؤنٹس کيس ميں مزيد بڑي گرفتارياں سامنے آگئیں، نيب نے سندھ بينک کے تين اعليٰ افسران کو گرفتار کرليا۔

کراچي ميں نيب نے چھاپہ مار کر سندھ بينک کے تين اعليٰ افسران کو گرفتار کرليا، گرفتار ہونے والوں ميں سابق صدر سندھ بينک بلال شيخ، بينک کے موجودہ صدرطارق احسان اور افسر نديم الطاف شامل ہيں۔

نیب ذرائع کے مطابق سابق صدر سندھ بينک بلال شیخ نے اومنی گروپ کو50ارب روپے کے قرضے ديے، بلال شيخ جعلي اکاؤنٹس کھلوانے،مني لانڈرنگ کے ماسٹرکہلاتے ہيں۔

بلال شيخ اورطارق سے اربوں کے گھپلوں کی معلومات حاصل ہوں گي،بلال شيخ بغير عہدے کے سندھ بینک کے معاملات دیکھتے تھے، بلال شیخ تاحال سندھ حکومت کی گاڑي استعمال کرتے ہيں۔

جعلي اکاؤنٹس کيس ميں نيب کے ہاتھوں مزيد گرفتاريوں کے بعد سابق صدر آصف زرداری اور وزیر اعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ کي مشکلات مزید بڑھ گئيں۔

خیال رہے کہ سابق صدر آصف زرداری، ان کی بہن فریال تالپور اور اومنی گروپ کے عبدالغنی مجید سمیت کئی افراد جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار ہیں۔

اس کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری، ان کی ہمشیرہ فریال تالپور سے بھی تفتیش کی گئی جب کہ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی تحریری طور پر جے آئی ٹی کو اپنا جواب بھیجا جب کہ اومنی گروپ کے سربراہ انور مجید اور نجی بینک کے سربراہ حسین لوائی ایف آئی اے کی حراست میں ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube