جعلی اکاؤنٹس کیس میں اہم پيش رفت، دو ملزمان رقم واپس دینے کو تیار

June 26, 2019

جعلی اکاؤنٹس کیس میں بڑی پیشرفت ہوئی ہے تین گرفتار ملزمان لوٹ کا مال واپس کرنے پر تیار ہوگئے اور پلی بارگین کی درخواست دیدی ، احتساب عدالت نے پنک ریذیڈنسی ریفرنس میں مسلسل عدم حاضری پر مناہل مجید کے ناقابل ضمانت ورانٹ گرفتاری جاری کردیئے جبکہ کراچی سے گرفتار عبدالغنی مجید کا نو روزہ جسمانی ریمانڈ منظورکرلیا ۔

سندھ میگا کرپشن کے جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار ملزمان خورشید جمالی، عارف علی اور آصف محمود رقم دینے کو تیار ہوگئے اور پلی بارگین کی درخواست دے دی جس پر فیصلہ چیئرمین کرینگے ۔

نیب نے احتساب عدالت کو بتایا کہ ملزمان پر نوری آباد پاور پلانٹ کی مشینری خریداری میں کرپشن کا الزام ہے، عدالت نے تینوں کے جسمانی ریمانڈ میں 4 جولائی تک توسیع بھی کردی ۔

پنک ریذیڈنسی اور ٹھٹھہ واٹرسپلائی ریفرنس میں ملزمہ مناہل مجید کی مسلسل غیر حاضری پر حاضر عدالت نے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیئے۔

دوسری جانب پارک لین کیس میں کراچی سے گرفتار عبدالغنی مجید بھی احتساب عدالت میں پیش کیا گیا نیب نے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کردی ۔

جج محمد بشیر نے 5 جولائی تک کا 9 روزہ ریمانڈ منظور کرلیا، سابق ایڈمنسٹریٹرکراچی حسین سید اور دیگر کیخلاف دائرریفرنس کے 9 میں سے 8 ملزمان احتساب عدالت میں پیش ہوئے ۔

عدالت نے یونس قدوائی کیخلاف کارروائی کی رپورٹ طلب کرلی اور سماعت 15 جولائی تک ملتوی کرتے ہوئے تمام ملزمان کو ریفرنس کی کاپیاں فراہم کرنے کا حکم بھی دے دیا ۔​