ہوم   >  پاکستان

جو اپنا ضمیر مار دیں وہ پی ٹی آئی میں جائیں جو نہ ماریں وہ جیل، بلاول بھٹو زرداری

6 months ago

بلاول بھٹو زرداری نے حکومت کیخلاف عوامی مہم چلانے کا اعلان کردیا، کہتے ہیں کہ ہم ڈرنے، جھکنے اور بکنے والے نہیں، آخری سانس تک آئین کا دفاع کریں گے، عوام کے مسائل پر آواز اٹھانا جرم ہے تو یہ جرم بار بار کرتے رہیں گے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نے وزیراعظم کو تنبیہ کہ کہ خان...

بلاول بھٹو زرداری نے حکومت کیخلاف عوامی مہم چلانے کا اعلان کردیا، کہتے ہیں کہ ہم ڈرنے، جھکنے اور بکنے والے نہیں، آخری سانس تک آئین کا دفاع کریں گے، عوام کے مسائل پر آواز اٹھانا جرم ہے تو یہ جرم بار بار کرتے رہیں گے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نے وزیراعظم کو تنبیہ کہ کہ خان صاحب! اتنا ظلم کرو جتنا برداشت کرسکو، دعا کرو تمہارے بعد آصف زرداری کی حکومت آئے، آصف علی زرداری اقتدار میں آکر انتقام نہیں لیتا۔ انہوں نے کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ جو اپنا ضمیر مار دیں وہ پی ٹی آئی میں جائیں جو نہ ماریں وہ جیل، معاشی حقوق کے ساتھ جمہوری اور انسانی حقوق کیلئے بھی لڑنا ہوگا۔ بلاول نے ’’نیا پاکستان نہ کھپے‘‘ کا نعرہ بھی لگادیا۔

بلاول بھٹو زرداری نے سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کی سالگرہ کے موقع پر نوابشاہ میں منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اپنے والدین کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا، بولے کہ بینظیر بھٹو کی پہچان پاکستان تھی، وہ سیاست میں ہوتے ہوئے بھی باکمال ماں تھیں، آصف زرداری نے جیل کاٹی لیکن بینظیر کے قول پر قائم رہا، وہ آج بھی کال کوٹھری کے پیچھے بینظیر کا قول نبھا رہا ہے، پورے پاکستان کو آصف زرداری پر فخر ہے، انہوں نے بی بی کی شہادت پر پاکستان کھپے کا نعرہ لگایا، 18 ویں ترمیم کو متفقہ طور پر منظور اور صوبوں کا احساس محرومی ختم کرایا۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ’’نیا پاکستان نہ کھپے‘‘ کا نعرہ بھی لگادیا۔

انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ  افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے آج جمہوریت کا سورج ڈوب رہا ہے، یہاں وزیراعظم، وزیر دفاع اور دیگر وزراء پر کیسز ہیں، حکومت 18ویں ترمیم کو ختم کرنا چاہتی ہے، یہ صوبوں کو کمزور کرنا اور عوام کے حقوق چھیننا چاہتے ہیں، آصف زرداری عوام کے حقوق کا محافظ ہے۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ عوام کے مسائل کیلئے آواز اٹھانا جرم ہے تو مجھے بھی یہ جرم کرنا ہے، یہ جرائم ذوالفقار بھٹو اور بینظیر بھٹو نے بھی کئے تھے، ہم یہ جرم بار بار کریں گے، اپنے نانا اور دادا کی سوچ کو آگے لیکر جانا چاہتا ہوں، جتنے جعلی کیسز بنانے ہیں بنالو، پیپلزپارٹی ماضی میں سرخرو ہوئی آئندہ بھی ہوگی۔

بجٹ کو عوام دشمن قرار دیتے ہوئے پیپلزپارٹی چیئرمین کا کہنا تھا کہ خدارا غریب عوام پر مظالم بند کیے جائیں، بجٹ کی شکل میں لوگوں کے معاشی حقوق پر ڈاکا ڈالا گیا۔ انہوں نے تنبیہ کی کہ خان صاحب! اتنا ظلم کرو جتنا برداشت کرسکو، دعا کرو تمہارے بعد آصف زرداری کی حکومت آئے، وہ اقتدار میں آکر انتقام نہیں لیتا، مولانا کی حکومت آئی تو سنگسار ہوجاؤ گے۔

بلاول نے اعلان کیا کہ بینظیر کی بیٹیوں کے آنسوؤں کے ایک ایک قطرے کا حساب ہوگا، محنت کشوں، مزدوروں، غریبوں کے معاشی قتل کا حساب لوں گا۔ وہ بولے کہ سلیکٹڈ وزیراعظم کہتا ہے کسی کو نہیں چھوڑوں گا، یہاں ایک نہیں دو پاکستان ہیں، ایک عمران کا دوسرا عوام کا، عمران خان کی آف شور کمپنی حلال، دوسروں کی حرام، عمران خان کا بنی گالہ جائز اور غریب کی جھونپڑی ناجائز۔

رکن قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی میں شامل ہونے والوں کو بھی ڈھکے چھپے الفاظ میں تنقید کا نشانہ بنایا، بولے کہ جو اپنا ضمیر مار دیں وہ پی ٹی آئی میں جائیں جو نہ ماریں وہ جیل، معاشی حقوق کے ساتھ جمہوری اور انسانی حقوق کیلئے بھی لڑنا ہوگا، نہ کٹھ پتلی حکومت منظور ہے اور نہ ہی عوام کا معاشی قتل، کیا یہ وہ جمہوریت ہے جس کیلئے بینظیر نے قربانی دی تھی؟، یہ سمجھتے ہیں دباؤ ڈال کر ہمیں خاموش کیا جاسکتا ہے، ہم ڈرنے، جھکنے اور بکنے والے نہیں، آخری سانس تک آئین کا دفاع کریں گے۔

چیئرمین پی پی پی نے کہا کہ یہ دھاندلی کے ذریعے عوام دشمن بجٹ منظور کرنے کی کوشش کررہے ہیں، آصف زرداری کی غیر موجودگی میں عوام دشمن بجٹ پیش کیا گیا، اپوزیشن کے 2 ممبران تاحال جیل میں موجود ہیں، دھاندلی زدہ حکومت کا عوام دشمن بجٹ منظور نہیں ہونے دیں گے، بجٹ میں ٹیکس، مہنگائی اور بیروزگاری کا تحفہ دیا گیا۔

بلاول بھٹو زرداری نے عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا اعلان کردیا، بولے کہ عوام میں جا کر انہیں حقائق سے آگاہ کروں گا، غریب باہر نکلیں اور عوام دشمن بجٹ کا راستہ روکیں، تمام جماعتوں کو کہتا ہوں عوام دشمن بجٹ کو ووٹ نہ دینا، ایم کیو ایم عوام دشمن بجٹ کو ووٹ دیتی ہے تو انہیں بھی حساب دینا ہوگا۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں