ہوم   >  پاکستان

پرویز خٹک کے حلقے میں عوام کو زہریلا پانی پلائے جانے کا انکشاف

5 months ago

  خیبر پختونخوا کے وسطی ضلع نوشہرہ میں عوام کو زہریلا پانی پلائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ حکام کی جانب سے خاموشی پر شہری نے سٹیزن پورٹل پر شکایت کردی۔ نوشہرہ وزیردفاع پرویزخٹک کا آبائی ضلع ہے اور یہاں سے تمام قومی و صوبائی حلقوں پر ان کے خاندان کے افراد منتخب ہوئے ہیں...

 

خیبر پختونخوا کے وسطی ضلع نوشہرہ میں عوام کو زہریلا پانی پلائے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ حکام کی جانب سے خاموشی پر شہری نے سٹیزن پورٹل پر شکایت کردی۔

نوشہرہ وزیردفاع پرویزخٹک کا آبائی ضلع ہے اور یہاں سے تمام قومی و صوبائی حلقوں پر ان کے خاندان کے افراد منتخب ہوئے ہیں جبکہ ضلعی حکومت بھی خٹک خاندان کی ہے۔

ضلع میں پانی کو ٹیسٹ کرنے کیلئے 396 نمونے حاصل کرکے ٹیسٹ کیے گئے جن میں 170 سیمپل آلودہ ثابت ہوئے۔ اس کے باجود متعلقہ حکام نے اس پر توجہ نہیں دی جس پر مقامی شخص نے وزیراعظم کی جانب سے قائم سٹیزن پورٹل پر شکایت کردی ہے۔

شکایت کرنے والے شہری کا کہنا ہے کہ متعلقہ حکام کو بارہا درخواستیں دیں مگر شنوائی نہ ہوئی۔ جس پر سیٹزن پورٹل میں شکایت درج کردی۔

آلودہ پانی کے زیادہ متاثرہ علاقوں میں میاں آباد، اکوڑہ خٹک اور اکبرپورہ شامل ہیں جبکہ دیگر علاقوں کا پانی بھی تسلی بخش نہیں۔

ضلع نوشہرہ خیبر پختونخوا کا وسطی اور وزیر دفاع پرویز خٹک کا آبائی ضلع ہے۔ گزشتہ دور حکومت میں پرویز خٹک صوبے کے وزیراعلیٰ تھے اور حالیہ دور میں ان کے خاندان سے 9،10 افراد قومی اور صوبائی اسمبلی میں پہنچے ہیں۔

ان میں سے بعض افراد منتخب ہوکر آئے جبکہ دیگر کو مخصوص نشستوں پر رکن قومی و صوبائی اسمبلی بنایا گیا۔ نوشہرہ کے ضلعی ناظم کا تعلق بھی پرویز خٹک کے خاندان سے ہے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں