اسلام آباد کے بلیوایریا خوف و ہراس پھیلانے والے مجرم سکندر کی اپیل مسترد

June 12, 2019

اسلام آباد ہائیکورٹ نے چھ سال پہلے اسلحہ کے زور پر وفاقی دارالحکومت میں خوف و ہراس پھیلانے اور شہر کے اہم تجارتی مرکزی بلیو ایریا کو گھنٹوں یرغمال بنانے والے سکندر کی سزا کے خلاف اپیل مسترد کر دی، عدالت نے قرار دیا ہے کہ مجرم کو سولہ سال قید کی سزا پوری کرنی ہوگی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے بلیوایریا فائرنگ کے مجرم سکندر کی اپیل مسترد کردی، عدالت نے کہا کہ بندوق کی نوک پر دہشت پھیلانے والا کسی ریلیف کا مستحق نہیں۔

عدالت عالیہ نے سزا کے خلاف سکندر کی اپیل پر 13 مارچ کو محفوظ کیا گیا فیصلہ سنا دیا تھا 22 صفحات پر مشتمل فیصلہ چیف جسٹس اطہرمن اللہ اورجسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے جاری کیا ہے، فیصلے میں قرار دیا گیا ہے کہ پراسیکیوشن نے اپنا کیس ثابت کردیا، لہذا مجرم کی اپیل مسترد کی جاتی ہے۔

تحریری فیصلے کے مطابق ٹرائل کورٹ نے سکندر کو کم سزا دینے کی وجہ بیان نہیں کی، وفاق نے سزا بڑھانے کیلئے اپیل بھی دائر نہیں کی۔ سکندر کو اپنی سزا پوری کرنا ہوگی۔

یاد رہے کہ سال 2013 میں سکندر نامی شخص نے جدید ہتھیاروں کے زور پر اسلام آباد کے تجارتی مرکز بلیو ایریا کو کئی گھنٹے تک یرغمال بنائے رکھا۔

واقعے کا ڈراپ سین اُس وقت ہوا تھا جب پیپلزپارٹی کے رہنما زمرد خان نے بات چیت کے بہانے ملزم کو دبوچ لیا، دو ہزار سترہ میں انسداد دہشت گردی عدالت نے سکندر کو سولہ سال قید کی سزاسنائی تھی۔