Tuesday, September 21, 2021  | 13 Safar, 1443

حکومت نے سنیئر ججز کیخلاف ریفرنس کی تصدیق کردی

SAMAA | - Posted: May 30, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: May 30, 2019 | Last Updated: 2 years ago

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے اعلیٰ عدالتوں کے ججوں کے خلاف حکومت کی جانب سے ریفرنس دائر کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپریم جوڈیشل کونسل نے 14 جون کو اٹارنی جنرل کو طلب کرلیا ہے۔

اسلام آباد میں مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ راز داری برتنے کے لیے سپریم جو ڈیشل کونسل کی کارروائی بند کمرے میں ہوتی ہے جس کی تفصیلات میڈیا پر نہیں بتائی جا سکتیں۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ کہ سپریم جوڈیشل کونسل نے نوٹسز جاری کرتے ہوئے 14 جون کو اٹارنی جنرل کو طلب کر لیا ہے۔

وفاقی حکومت نے سپریم کورٹ کے سنیئر جج جسٹس فائز عیسی سمیت 3 ججز کے خلاف ریفرنس دائر کیے ہیں۔ ان میں کا تعلق اسلام آباد ہائی کورٹ سے ہے۔ گزشتہ روز ایڈیشنل اٹارنی جنرل زاہد فخرالدین نے ’عدلیہ کو نشانہ بنانے‘ پر احتجاج کرتے ہوئے استعفیٰ دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: ججوں کے خلاف ریفرنس، ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے احتجاجاً استعفیٰ دے ديا

دوسری جانب جسٹس فائز عیسی نے صدر مملکت عارف علوی کو خط لکھ کر پوچھا ہے کہ آیا واقعی ان کے خلاف ریفرنس دائر کیا گیا ہے یا نہیں۔ اگر حکومت نے صدارتی ریفرنس دائر کیا ہے تو پھر میڈیا میں ’مخصوص معلومات‘ لیک کرکے بدنام کرنے کے بجائے ریفرنس کی کاپی فراہم کی جائے۔

فردوس عاشق اعوان نے پریس کانفرنس میں نواز شریف کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ آج ہمیں اداروں کا احترام سکھایا جا رہا ہے مگر عوام اب قیدی نمبر 420 کے فریب میں آنے والے نہیں کیوں کہ ’توہین عدالت‘ کے سب سے زیادہ ’میڈل‘ نواز لیگ کے پاس ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube