Saturday, November 28, 2020  | 11 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > Latest

گرفتار رکن قومی اسمبلی علی وزیر کا 8 روزہ ریمانڈ منظور

SAMAA | - Posted: May 27, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: May 27, 2019 | Last Updated: 2 years ago

رکن قومی اسمبلی علی وزیر کو بنوں کی انسداد دہشت گردی عدالت میں پیش کرديا گيا۔ عدالت نے علی وزیر کو 8 روزہ ریمانڈ پر انسداد دہشت گردی ڈپارٹمنٹ کے حوالے کر دیا، ایم این اے کو مزید تفتیش کیلئے پشاور منتقل کیا جائے گا۔

گزشتہ روز شمالی وزیرستان کے علاقے خارکمر میں فائرنگ کے تبادلے میں 3 افراد ہلاک اور 5 فوجی اہلکاروں سمیت 15 افراد زخمی ہوگئے تھے۔ واقعے کی آزاد ذرائع سے تاحال کوئی تصدیق نہیں ہوئی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق واقعے کے بعد پاک فوج نے رکن قومی اسمبلی علی وزیر کو ان کے 8 ساتھیوں سمیت گرفتار کرلیا تھا جبکہ رکن قومی اسمبلی محسن جاوید داوڑ موقع سے فرار ہوگئے تھے، ان پر عوام کو اکسانے کا الزام ہے۔

پاک فوج کی چیک پوسٹ پر حملے کے الزام میں گرفتار رکن قومی اسمبلی علی وزیر کو بنوں میں انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کیا گیا، عدالت نے ایم این اے کا 8 روزہ ریمانڈ منظور کرتے ہوئے انہیں سی ٹی ڈی کے حوالے کردیا۔

نمائندہ سماء کے مطابق رکن قومی اسمبلی علی وزیر کو مزید تفتیش کيلئے بنوں سے پشاور منتقل کیا جائے گا۔

ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ گرفتار رکن قومی اسمبلی علی وزیر اور رکن قومی اسمبلی محسن داوڑ اپنے دیگر ساتھیوں سمیت لاٹھیوں سے مسلح ہو کر حملہ کیا۔

متن کے مطابق ایف آئی آر میں 9 ملزمان کیخلاف 302، 324 اور اے ٹی اے 7 کی دفعات شامل کی گئی ہیں۔

ایچ آر سی پی کا علی وزیر کی رہائی کا مطالبہ

ہیومن رائٹس کمیشن پاکستان نے علی وزیر اور دیگر گرفتار افراد کی رہائی کا مطالبہ کردیا۔ ایک اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ واقعے سے متعقل حقائق جاننے کیلئے پارلیمانی کمیشن بنایا جائے۔

ایچ آر سی پی کا کہنا ہے کہ مقامی آبادی کے تحفظات اور خدشات کے خاتمے کیلئے سنجیدہ کوششیں ہونی چاہئیں، ریاست میڈیا اور سول سوسائٹی کی سابقہ فاٹا میں آزادانہ رسائی یقینی بنائے۔

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی واقعے سے متعلق اس بیان جاری کیا ہے جس میں پاکستانی حکومت سے کارکنوں کے قتل کی آزادانہ اور مؤثر تحقیقات کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

بین الاقوامی ادارے کا کہنا ہے کہ عالمی قانون کے تحت حکام کی جانب سے طاقت کا استعمال صرف انتہائی ضروری مواقع پر زندگیوں کی حفاظت کے پیش نظر ہی کیا جاسکتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube