ہوم   >  پاکستان

سمندر میں ناکامی کے بعد زیر زمین تیل و گیس کی تلاش کا نیا معاہدہ

4 months ago

وزیراعظم عمران خان سے اسلام آباد میں کویت پیٹرولیم کے چیف ایگزیکٹو شیخ نواف سعود وفد کے ہمراہ ملاقات کررہے ہیں۔ فوٹو : آن لائن

سمندر سے مطلوبہ نتائج نہ ملنے کے بعد زیر زمین تیل و گیس کی تلاش کیلئے معاہدہ طے پاگیا، کویتی آئل کمپنی پاکستان میں تیل و گیس کے ذخائر تلاش کرے گی۔ وزیراعظم نے کمپنیز کو تمام سہولیات فراہم کرنے کی یقین دہانی بھی کرادی۔

وزیراعظم عمران خان سے کویت پیٹرولیم کے چیف ایگزیکٹو شیخ نواف سعود نے ملاقات کی، جس میں انہوں نے پاکستان میں تیل کی تلاش سے متعلق دلچسپی ظاہر کی اور وزیراعظم کو 1980ء میں پاکستان میں تیل کی تلاش سے متعلق بھی آگاہ کیا۔

اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں تیل کی تلاش کا شعبہ ماضی میں نظر انداز ہوتا رہا، پی ٹی آئی حکومت نئی پیٹرولیم پالیسی پر کام کر رہی ہے۔

وزیر توانائی عمر ایوب خان نے کہا ہے کہ وزارت پیٹرولیم اور کویتی کمپنی کے درمیان زیر زمین تیل و گیس کی تلاش کیلئے اہم معاہدہ  ہوا ہے، کویتی کمپنی پنجاب اور خیبرپختونخوا میں ذخائر تلاش کرے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ کھدائی مکھڑ بلاک میں کی جائے گی جس کا رقبہ 1562 مربع کلو میٹر ہے، پہلے 3 سال میں کمپنی 980 ورک یونٹ حاصل کرے گی۔

واضح رہے کہ امریکی کمپنی ایگزون موبل نے پاکستان میں کراچی کے ساحل کے قریب تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کیلئے کھدائی کی تھی تاہم یہاں سے تیل و گیس کا ذخیرہ نہیں ملا۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں