Saturday, October 31, 2020  | 13 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

داتا دربار حملہ، خود کش بمبار کی شناخت کا دعوی

SAMAA | - Posted: May 21, 2019 | Last Updated: 1 year ago
Posted: May 21, 2019 | Last Updated: 1 year ago

محکمہ انسداد دہشت گردی نے داتا دربار حملے کے خود کش بمبار کی شناخت کا دعوی کیا ہے۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں کے مطابق بھاٹی گیٹ کے علاقے سے ایک سہولت کار بھی گرفتار کیا گیا، جس سے خودکش جیکٹ اور دھماکا خیز مواد برآمد کیا گیا، محسن خان خیبر پختونخوا کے علاقے شبقدر...

محکمہ انسداد دہشت گردی نے داتا دربار حملے کے خود کش بمبار کی شناخت کا دعوی کیا ہے۔

قانون نافذ کرنے والے اداروں کے مطابق بھاٹی گیٹ کے علاقے سے ایک سہولت کار بھی گرفتار کیا گیا، جس سے خودکش جیکٹ اور دھماکا خیز مواد برآمد کیا گیا، محسن خان خیبر پختونخوا کے علاقے شبقدر کا رہائشی ہے۔

محکمہ انسداد دہشت گردی ( سی ٹی ڈی) کے مطابق گرفتار سہولت کار کا نام محسن خان ہے، جس نے دوران تفتیش کئی اہم انکشافات کیے ہیں۔

لاہور داتا دربار، پولیس وین کے قریب خودکش حملہ،10 افراد شہید، متعدد زخمی

سی ٹی ڈی کے مطابق خودکش حملہ آور کی شناخت صادق اللہ کے نام سے کی گئی ہے، جو افغان شہری ہے اور افغان پاسپورٹ کے ذریعے طورخم بارڈر سے پاکستان میں داخل ہوا، خودکش بمبار نے بھاٹي گيٹ ميں ايک رات بسر کي۔

واضح رہے کہ آٹھ مئی کی صبح لاہور میں معروف درگاہ داتا دربار کے باہر ایلیٹ فورس کی موبائل کے قریب خودکش حملے میں 14 افراد شہید، جب کہ تیس سے زائد زخمی ہوئے۔ شہداء میں بڑی تعداد ایلیٹ فورس کے اہل کاروں کی تھی۔

 

حملے کی موصول ہونے والی سی سی ٹی وی ویڈیو کے مطابق لاہور میں خودکش حملہ آور شيش محل روڈ سے داتا دربار کے گيٹ نمبر 2 کي طرف آيا اور 8 بج کر 54 منٹ پر پوليس وين کے قريب خود کو اڑايا۔ حملہ آور کي عمر 20 سے 22 سال کے درميان ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube