Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

خاصہ داروں کی ہڑتال، جنوبی وزیرستان میں پولیو مہم بند

SAMAA | - Posted: Apr 22, 2019 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Apr 22, 2019 | Last Updated: 3 years ago

ملک بھر میں آج سے انسداد پولیو مہم کا آغاز ہوگیا ہے مگر خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع جنوبی وزیرستان میں خاصہ دار فورس کی ڈیوٹی سے بائیکاٹ کے باعث مہم شروع نہ ہوسکی۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق مہم نہ چلنے کے باعث 60 ہزار سے زائد بچے انسداد پولیو قطروں سے محروم رہ جائیں گے۔

خاصہ دار فورس کا موقف ہے کہ ان کو 9 ماہ سے تنخواہیں نہیں ملیں لہذا جب تک تنخواہوں کی ادائیگی نہیں کی جاتی، ڈیوٹی نہیں کریں گے۔

خاصہ دار فورس کے جرگہ نے فیصلہ کیا ہے تنخواہیں ملنے سے قبل ڈیوٹی سرانجام دینے والے اہلکاروں پر جرمانہ عائد کرنے کے ساتھ ان کے گھر مسمار کیے جائیں گے۔

قبل ازیں 18 اپریل کو جنوبی وزیرستان کے خاصہ دار فورس کے اہلکاروں نے تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے خلاف ٹانک میں احتجاج کرتے ہوئے پولیو مہم کے دوران ڈیوٹی کے بائیکاٹ کا اعلان کیا تھا۔

ٹانک میں کشمیر چوک پر احتجاج کرتے ہوئے مظاہرین کا کہنا تھا کہ حکومت انضمام کے بعد فاٹا دشمن پالیسیوں پر اتر آئی ہے۔ پچھلے کئی ماہ سے خاصہ دار فورس کی تنخواہوں کی بندش کے باعث گھروں میں فاقوں کا عالم ہے۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے قبائلی اضلاع میں خدمات انجام دینے والے لیویز اور خاصہ داراہلکاروں کو پولیس میں ضم کرنے کا اعلان کیا تھا۔

محمودخان نے کہا تھا کہ تمام لیویز اور خاصہ داروں کو پولیس میں ضم کرکے ان کے تمام تحفظات دور کردیے ہیں۔ یہ 28 ہزار اہلکار ہیں جنہیں تربیت دیں گے اور پولیس کی طرز پر ہی تمام رینکس، مراعات اور ترقیاں دی جائیں گی۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے نوٹی فکیشن کے مطابق اس کام کے لیے 6 ماہ کا وقت دیا گیا ہے اور یہ انضمام رواں سال اکتوبر تک مکمل ہوگا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube