پاکپتن میں پولیس کے ٹارچر سیل سے نوجوان بازیاب

April 20, 2019

پاکپتن میں عدالتی بیلف نے چھاپہ مار کر عارفوالہ پولیس کے نجی ٹارچر سیل سے زنجیروں میں جکڑا نوجوان بازیاب کرالیا گیا۔

پاکپتن میں عدالتی بیلف نے تھانہ سٹی کے قریب واقع پولیس کے نجی ٹارچر سیل پر چھاپہ مار کر زنجیروں میں جکڑے بے گناہ نوجوان کو بازیاب کرالیا، جب ٹیم وہاں پہنچی تو ایک معطل پولیس اہلکار سیل میں قید ارسلان سے پوچھ گچھ کررہا تھا۔

پولیس نے مؤقف اختیار کیا کہ ارسلان کو چوری کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔ ایس ایچ او کا کہنا تھا کہ چوری کے مقدمے میں نامزد ملزم کو آج صبح ہی ایس آئی منظور گرفتار کرکے لایا ہے، باقاعدہ روزنامچے میں رپورٹ درج ہے۔

ارسلان کا کہنا ہے پولیس جھوٹ بول رہی ہے، اس کی بازیابی کی درخواست 16 اپریل کو دائر کی گئی تھی، جہاں کام کرتا ہوں وہ لوگ کام زیادہ لیتے اور تنخواہ کم دیتے ہیں، تنخواہ بڑھانے کا کہا تو دن بھر کام کروانے کے بعد مجھے شام کو پولیس کے حوالے کردیا۔

چھاپے کے دوران معطل اہلکار عاشق عدالتی بیلف کو بھی دھکے دیتا رہا، نوجوان کو عدالت میں پیش کیا گیا جہاں جج نے پولیس سے معاملے کی تفصیلی رپورٹ طلب کرلی۔