مہمند: انصاف روزگار پروگرام کا افتتاح، آئس نشے کیخلاف سخت قانون منظور

April 16, 2019

وزیراعلیٰ محمود خان نے ضلع مہمند میں انصاف روزگارپروگرام کا افتتاح کردیا ۔ قبائلی عوام کوبلا سود قرض دیا جائے گا۔  کابینہ اجلاس میں آئس نشے کی روک تھا کیلئے قانون کی منظوری کے علاوہ دیگر اہم فیصلے بھی کیے گئے۔

وزیراعلیٰ  نے ضلع  میں انصاف روزگارپروگرام کا افتتاح  کردیا جس کے تحت قبائلی عوام کو 50 ہزارسے 10 لاکھ تک کے قرضے بلا سود دیے جائیں گے ، اس کے علاوہ انہیں ہیلتھ کارڈ کی سہولت بھی فراہم کی جائے گی۔

روزگار پروگرام کے افتتاح کے بعد دہشت گردی کے خاتمے اور فاٹا انضمام کے بعد ضلع خیبر پختونخوا کابینہ کا ضلع مہمند میں پہلا اجلاس ہوا۔ وزیراعلیٰ کی زیر صدارت ہونے والے اس اجلاس میں صوبائی حکومت نے منشیات کی روک تھام کیلئے مہم چلانے کا فیصلہ کرلیا۔ آئس نشے کے استعمال کیخلاف قانون بھی منظور کرلیا گیا۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ 100 گرام آئس پر 7 سال قید اور 3 لاکھ جرمانہ ہوگا جبکہ ایک کلو آئس پر سزائے موت، عمر قید یا 14 لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

صوبائی مشیر اجمل وزیر نے بتایا کہ فاٹا سے خیبر پختونخوا میں ضم ہونے والی سیکیورٹی فورسز کا تمام اسٹرکچر 6 ماہ میں مکمل ہو جائے گا۔

اجلاس میں صوبائی محتسب سیکٹریٹ سروسز میں ترامیم، خیبرپختونخوا جوڈیشل اکیڈمی ترمیمی بل، محکمہ اعلیٰ تعلیم میں اسکالر شپ رولز بنانے اور پاک آسٹریا انسٹیٹیوٹ کےلئے ضمنی گرانٹ کی منظوری دے دی گئی۔

وزیراطلاعات کے مطابق لوکل گورنمنٹ بل فائنل ہوچکا ہے جو آئندہ خصوصی اجلاس میں منظور کرایا جائے گا۔