مذاکرات کامیاب، ہزارہ برادری نے دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا

April 16, 2019

 

وزیر مملکت داخلہ اور وزیراعلیٰ بلوچستان سے مذاکرات کے بعد ہزارہ برادری نے 4 روز سے جاری دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

کوئٹہ کے علاقے ہزار گنجی میں جمعہ کے روز ہونیوالے دھماکے کے بعد ہزارہ برادری نے احتجاجاً دھرنا دیا تھا، واقعے میں 20 افراد جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوئے تھے۔

وزیر مملکت داخلہ شہریار آفریدی اور وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان ایک بار پھر مذاکرات کیلئے ہزارہ برادری کے پاس پہنچے، دھرنا منتظمین نے حکومتی یقین دہانی کے بعد دھرنا ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

مزید جانیے : کوئٹہ، ہزار گنجی میں دھماکا، 20افراد جاں بحق، 40 زخمی

وزیراعلیٰ بلوچستان نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان میں امن کیلئے بڑی قربانیاں دی گئی ہیں، بلوچستان خصوصاً کوئٹہ کے لوگوں نے بہت مشکل وقت دیکھا، بلوچستان کے حالات ایک دن میں بہتر نہیں ہوسکتے، ماضی میں کسی وفاقی وزیر نے تفتان بارڈر تک آکر معاملات نہیں دیکھے۔

انہوں نے کہا کہ وزیر مملکت شہریار آفریدی ایک نہیں 2 مرتبہ تفتان بارڈر پہنچے، انہوں نے زائرین کے مسائل خود جاکر دیکھے، دھرنا ختم کرنے پر ہزارہ برادری کا مشکور ہوں، شہریوں کا تحفظ ریاست کی ذمہ داری ہے۔