Tuesday, October 20, 2020  | 2 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

پاکستانی ایف 16 لڑاکا طیارہ گرانے کا بھارتی دعوی جھوٹا نکلا،امریکا

SAMAA | - Posted: Apr 5, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Apr 5, 2019 | Last Updated: 2 years ago

بھارت کا فروری میں پاکستانی لڑاکا طیارہ ایف 16 گرانے کا جھوٹ بے نقاب ہوگیا۔ امریکی عہدے داروں کا کہنا ہے کہ یہ ممکن ہی نہیں کہ مگ 21 سے ایف 16 کو نشانہ بنا کر تباہ کیا جائے۔ امریکا نے تمام ایف 16 طیارے پاکستان کے پاس موجود ہونے کی تصدیق کردی۔ نامور امریکی...

بھارت کا فروری میں پاکستانی لڑاکا طیارہ ایف 16 گرانے کا جھوٹ بے نقاب ہوگیا۔ امریکی عہدے داروں کا کہنا ہے کہ یہ ممکن ہی نہیں کہ مگ 21 سے ایف 16 کو نشانہ بنا کر تباہ کیا جائے۔ امریکا نے تمام ایف 16 طیارے پاکستان کے پاس موجود ہونے کی تصدیق کردی۔

نامور امریکی جریدے فارن پالیسی میں اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ بھارت کی جانب سے پاکستانی لڑاکا طیارہ ایف سولہ گرانے کا دعوی سراسر جھوٹا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بھارت پاکستان کو نقصان پہنچانے میں ناکام رہا اور اپنا طیارہ اور پائلٹ کھویا۔

بھارت نے اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو پاکستانی طیارہ سمجھ کر مار گرادیا

فارن پالیسی میگزین کی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان نے امریکی اہلکاروں کو پاکستان آ کر ایف 16 طیارے گننے کی پیشکش کی تھی جس کے بعد امریکی اہلکاروں نے پاکستان کا دورہ کیا اور یہاں موجود ایئر بیسز پر جنگی ایف 16 طیارے گنے گئے اور تمام طیارے پاکستان کے پاس موجود ہونے کی تصدیق کی گئی۔ رپورٹ کے مطابق امریکی اہلکار کا کہنا ہے کہ ایف 16 کے معاہدے میں طیارےکسی ملک کے خلاف استعمال نہ کرنے کی شرط نہیں، یہ یقیناً خام خیالی ہوگی کہ ہم کوئی سامان بیچیں اور وہ جنگ میں پاکستان استعمال نہ کرے۔

 بھارتی فضائیہ کا مگ 27 لڑاکا طیارہ گر کر تباہ

امریکی عہدے داروں کا کہنا ہے کہ ایف 16 طیارے گرانے سے متعلق جھوٹ بول کر بھارت نے دنیا بھر کو گمراہ کرنے کی کوشش کی۔ رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ بھارت پاکستانی طیارے کو تو نشانہ نہ بنا سکا، تاہم اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو پاکستانی طیارہ سمجھ کر مار گرایا، صرف یہ ہی نہیں بلکہ اب تک رواں سال میں بھارت میں جنگی طیارے گرنے کے متعدد واقعات بھی سامنے آئے۔

واضح رہے کہ پاکستان نے فروری 27 کو مقبوضہ کشمیر کے علاقے بڈگام میں 2 بھارتی جنگی طیارے مار گرائے تھے۔ ایک مگ 21 طیارہ پاکستانی حدود میں آزاد کشمیر میں، جب کہ دوسرا مقبوضہ کشمیر میں گرا۔ بعد ازاں پاکستانی حدود میں اترنے والے ایک پائلٹ کو حراست میں لے لیا گیا تھا۔ پاکستان نے امن کی پالیسی اپناتے ہوئے بھارتی پائلٹ اسکواڈرن لیڈر ابھی نند کو بھارت کے حوالے کردیا تھا۔ بھارت کو ان طیاروں کے تباہ ہونے سے 5 کروڑ ڈالر سے زائد کا نقصان ہوا تھا۔

اس موقع پر بھارت نے دعویٰ کیا تھا کہ ونگ کمانڈر ابھی نندن نے پاکستانی طیارہ مار گرایا تھا۔ دوسری جانب بھارت نے اسی دن ایک پاکستانی ایف سولہ طیارہ گرانے کا دعویٰ کیا تھا جسے اب امریکی رپورٹ نے مسترد اور جھوٹا قرار دیدیا ہے۔ واضح رہے کہ امریکی عہدے داروں کی یہ رپورٹ بھارتی انتخابات سے صرف ایک ہفتہ قبل منظر عام پر آئی ہے، جس پر نریندر مودی حکومت کو مزید جھوٹ بولنے پر شدید تنقید کا سامنا ہے۔

 

دلچسپ بات یہ ہے کہ مگ یعنی (میکوین گوریوک) ابھی بھی سری لنکا ، کاغزستان اور بھارتی فضائیہ کے استعمال میں ہیں، جب کہ روس اور یوکرائن میں ان طیاروں کو گراونڈ کردیا گیا ہے۔ خیال رہے کہ البانیہ کے پہاڑوں میں ایک ایسا گودام ہے، جہاں ان مگ طیاروں کو پھینک دیا گیا ہے اور اسے مگ 21 کا قبرستان بھی کہا جاتا ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube