Sunday, August 9, 2020  | 18 Zilhaj, 1441
ہوم   > Latest

مقتول افضل کوہستانی کے بھائی نے تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی کا مطالبہ کردیا

SAMAA | - Posted: Apr 3, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Apr 3, 2019 | Last Updated: 1 year ago

خیبر پختونخوا کے ضلع ایبٹ آباد میں قتل ہونے والے افضل کوہستانی کے بھائی بن یاسر نے مطالبہ کیا ہے کہ افضل کے قتل کی تحقیقات کے لیے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم جبکہ کوہستان ویڈیو اسکینڈل کے تمام کرداروں کو سامنے لانے کے لیے جوڈیشل کمیشن قائم کیا جائے۔

پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بن یاسر نے کہا کہ کوہستان ویڈیو اسکینڈل آنے کے بعد اب تک چار لڑکیاں اور میرے چار بھائی قتل ہوچکے ہیں حالانکہ وہ ویڈیو جعلی تھی جس میں الگ تالیاں بجاتی لڑکیوں کو ہمارے ڈانس کے ساتھ ایڈیٹ کرکے نیٹ پر ڈالا گیا۔

بن یاسر نے الزام عائد کیا کہ افضل کوہستانی کا قاتل عبدالحیمد ہے جس کو گرفتار کرنے کے بجائے پولیس نے ہمارے بھانجے پر الزام عائد کر کے گرفتار کرلیا ہے جسے رہا کیا جائے۔

افضل کوہستانی کے بھائی بن یاسر پریس کانفرنس کر رہے ہیں۔ فوٹو۔ سما ڈیجیٹل

انہوں نے کہا کہ چار بھائیوں کے 22 بچے یتیم ہوکر بے اسرا ہوچکے ہیں اور ہمیں بھی قتل کی دھمکیاں دی جارہی ہیں، جو ہماری حمایت کرتا ہے اس کو بھی دھمکیاں دی جاتی ہیں۔ سماجی رہنماء فرزانہ باری نے سینٹ کی انسانی حقوق کمیٹی کو بھی ان  خطرات سے آگاہ کیا ہے۔

بن یاسر نے کہا کہ ہمارے خاندان کے افراد الائی ضلع بٹگرام میں پناہ لئے ہوئے ہیں، کوہستان میں ہماری زمینوں پر بھی قبضہ کیا گیا۔ ہماری آمدن کے ذرائع ختم ہوگئے ہیں۔ حکومت کوہستان میں ہماری زمینوں کا قبضہ چھڑا کر ہمارے حوالے کرے۔

انہوں نے کہا کہ ایبٹ آباد پولیس پر ہمیں اعتماد نہیں کیس کو کرائم برانچ کے حوالے کیا جائے اور ہمیں سیکیورٹی فراہم کی جائے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube