Friday, August 7, 2020  | 16 Zilhaj, 1441
ہوم   > Latest

کرائسٹ چرچ مسجد حملہ بڑھتے ہوئے اسلاموفوبیا کا نتیجہ ہے، عمران خان

SAMAA | - Posted: Mar 15, 2019 | Last Updated: 1 year ago
SAMAA |
Posted: Mar 15, 2019 | Last Updated: 1 year ago

وزیراعظم عمران خان نے نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں مساجد پر دہشت گرد حملے کو تکلیف دہ قرار دیتے ہوئے شدید الفاظ میں مذمت کردی، کہتے ہیں کہ حملے نے ہمارے مؤقف کی تائید کردی کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا، ان حملوں کے پیچھے تیزی سے پھیلتا اسلاموفوبیا ہے۔

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مساجد میں فائرنگ کا واقعہ نماز جمعہ کے وقت پیش آیا، جس میں 49 افراد شہید اور درجنوں زخمی ہوگئے، جاں بحق افراد کی تعداد میں مزید اضافے کا خدشہ ہے۔

مزید جانیے : کرائسٹ چرچ،2مساجد پر حملہ،49سے زائد نمازی شہید،متعدد زخمی

حملے کے وقت مساجد میں 500 سے زائد نمازی موجود تھے جن میں بنگلہ دیشی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی بھی شامل تھے تاہم تمام کرکٹرز واقعے میں محفوظ رہے۔ تازہ اطلاعات کے مطابق آسٹریلیا میں تعینات پاکستانی ہائی کمشنر نے تصدیق کی ہے کہ واقعے میں 6 پاکستانی شہری تاحال لاپتہ ہیں۔

 ویڈیو:کرائسٹ چرچ حملہ،بنگلادیشی ٹیم کومسجد کے عقبی راستے سے نکالا

وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کرائسٹ چرچ میں مساجد میں دہشت گردی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے اسے انتہائی تکلیف دہ قرر دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ حملہ ہمارے اس مؤقف کی تصدیق کرتا ہے جسے ہم مسلسل دہراتے آئے ہیں کہ “دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں”، ہماری ہمدردیاں اور دعائیں متاثرین اور ان کے اہل خانہ کیساتھ ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان بڑھتے ہوئے حملوں کے پیچھے نائن الیون کے بعد تیزی سے پھیلنے والا “اسلاموفوبیا” کار فرما ہے، جس کے تحت دہشت گردی کی ہر واردات کی ذمہ داری مجموعی طور پر اسلام اور سوا ارب مسلمانوں کے سر تھوپنے کا سلسلہ جاری رہا۔

ٰہہ بھی پڑھیں : کرائسٹ چرچ مسجد پر حملہ کرنے والا کون تھا ؟

عمران خان کہتے ہیں کہ دنیا بھر میں مسلمانوں کی جائز سیاسی جدوجہد کو نقصان پہنچانے کیلئے بھی یہ حربہ آزمایا گیا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube