Tuesday, October 20, 2020  | 2 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

سیاسی و عسکری قیادت کا بھارتی جارحیت کی صورت میں متحد رہنے کا عزم

SAMAA | - Posted: Feb 28, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 28, 2019 | Last Updated: 2 years ago

سیاسی و عسکری قیادت نے جارحیت کی صورت میں متحد رہنے کے عزم کا اظہار کردیا، امن و ترقی کیلئے تجاویز پیش کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جنگ کوئی آپشن نہیں پالیسی کی ناکامی ہے۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کہتے ہیں تمام پارلیمانی رہنماؤں نے حکومت اور مسلح افواج کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کردیا۔

بھارت سے کشیدہ صورتحال پر بریفنگ کیلئے پارلیمانی رہنماؤں کا ان کیمرہ اجلاس اسلام آباد میں ہوا، آرمی چیف کا آمد پر گرم جوشی سے استقبال کیا گیا، پارلیمانی رہنماؤں نے دشمن کا ڈٹ کر مقابلہ کرنے پر بہادر مسلح افواج کو خراج تحسین پیش کیا۔

تفصیلات جانیں : پاکستان کی طرف سے امن کا پیغام ہے،جنگ کی طرف نہیں جانا چاہتے،پاک فوج

بھارتی اشتعال انگیزی پر سیاسی اور عسکری قیادت ایک پیج پر آگئے، ان کیمرا اجلاس میں وزیر خارجہ اور ڈی جی آئی ایس پی آر نے پارلیمانی رہنماؤں کو سرحدی صورتحال اور جوابی کارروائی پر اعتماد میں لیا، نیشنل کمانڈ اتھارٹی کے فیصلوں اور آئندہ کی حکمت عملی سے بھی سیاسی قیادت کو آگاہ کیا گیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ پاکستان کے تحفظ کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین میں مکمل اتفاق رائے تھا، سب نے اپنے عزم کا اعادہ کیا۔ وہ بولے کہ تمام رہنماؤں نے افواج اور حکومت پاکستان کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا ہے، آرمی چیف نے موجودہ صورتحال اور اقدامات پر سب کو اعتماد میں لیا۔

مزید جانیے : پاکستان اور بھارت کسی بھی غلط فہمی کا شکار ہوکر جنگ کے متحمل نہیں ہوسکتے،عمران خان

اپوزیشن نے بھارتی طیاروں کی آمد پر پاک فضائیہ کی جوابی کارروائی کی تعریف کی اور مودی سرکار کو ہوش کے ناخن لینے کا مشورہ بھی دیا۔

 شہباز شریف کا کہنا تھا کہ بات کو مزید بڑھانے سے گریز کرنا چاہئے ورنہ خطے میں بدامنی ہوگی۔ آصف زرداری بولے کہ سب کا مورال بہت بلند ہے، بھارت کو ہماری سرزمین میں داخل ہونے کی جرأت کیسے ہوئی، اسے سبق سکھادیں گے۔

وزیر دفاع پرویز خٹک نے دو ٹوک بتادیا کہ بھارت او آئی سی اجلاس میں گیا تو پاکستان کسی صورت شرکت نہیں کرے گا، بریفنگ کی وجہ سے کافی اطمینان ہوا، اصل کہانی سمجھ آگئی، پروپیگنڈے کا توڑ نکل آیا، ہم خطے میں امن اور اب بھی بات چیت چاہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : پاکستان نے بھارت کے 2 جنگی طیارے مار گرائے،پاک فوج کی تصدیق

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پارلیمانی رہنماؤں کو بتایا کہ بھارت کو ہم نے مؤثر جواب دے دیا ہے لیکن بھارت کی جانب سے مزید حرکت کا خدشہ موجود ہے تاہم ہم پاکستان کے دفاع کیلئے پوری طرح تیار ہیں۔

دوسری جانب اجلاس کے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ کسی بھی جارحیت کی صورت میں پوری قوم متحد ہے، اجلاس کے شرکاء نے امن و ترقی کیلئے تجاویز پیش کیں، کہا گیا کہ جنگ کوئی آپشن نہیں پالیسی کی ناکامی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube