Sunday, September 20, 2020  | 1 Safar, 1442
ہوم   > Latest

ایبٹ آباد،عنبرین قتل کیس، گرفتار تمام 15 ملزمان عدم ثبوت پر بری

SAMAA | - Posted: Feb 22, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Feb 22, 2019 | Last Updated: 2 years ago

ایبٹ آباد میں سال 2016 میں رونما ہونے والے عنبرین قتل کیس میں گرفتار تمام 15 ملزمان کو عدم ثبوت کی بنا پر رہا کردیا گیا۔ مقتولہ عنبرین کے والد کا کہنا ہے کہ فیصلے کے خلاف اپیل دائر کروں گا۔

سال 2016 میں ایبٹ آباد کے علاقے مکول گاوں میں غیر قانونی جرگے کے حکم پر عنبرین کو جلانے کا حکم دیا گیا تھا۔ عنبرین پر الزام عائد کیا گیا تھا کہ اس نے اپنی دوست صائمہ کو پسند کی شادی کیلئے فرار کرانے میں مدد فراہم کی ہے۔

ایبٹ آباد میں لرزہ خیر واردات، لڑکی کو کار میں زندہ جلادیا گیا

بعد ازاں عنبرین کی لاش سفید رنگ کی گاڑی سے برآمد کی گئی، جو مکمل طور پر جلی ہوئی تھی۔ واقعہ کی اطلاع ملنے پر پولیس کی جانب سے تفتیش کا آغاز ہوا اور 15 ملزمان کو گرفتار کیا گیا تھا۔

ایبٹ آباد میں لڑکی کا قتل جرگے کے کہنے پر ہوا

پولیس کے مطابق انسداد دہشت گردی کی عدالت نے گرفتار تمام 15 ملزمان کو عدم ثبوتوں کی بنا پر رہا کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ مقتولہ پر دوست کي پسند کي شادي کرانے ميں معاونت کا الزام تھا، عنبرين کو 29 اپريل2016 کو گاڑي ميں جلايا گيا تھا۔

سماء نے زندہ جلائی گئی عنبرین کی دوست کو ڈھونڈ نکالا

میڈیا سے گفت گو کرتے ہوئے مقتولہ عنبرین کے والد کا کہنا ہے کہ وہ انسداد دہشت گردی عدالت کے فیصلے کے خلاف عدالت سے رجوع کرکے اپیل دائر کریں گے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube