ہوم   >  پاکستان

مردان، اسٹیج اداکارہ کی لاش کھتیوں سے برآمد

10 months ago

مردان کی اسٹیج اداکارہ لباب عرف گلالئی کی لاش مقامی کھتیوں سے برآمد کی گئی ہے، اداکارہ تین روز قبل مردان سے پشاور جاتے ہوئے لاپتا ہوگئی تھیں۔

پولیس کے مطابق تین دن قبل لاپتہ ہونے والی لباب عرف گلالئی کی لاش گزشتہ روز کھیتوں سے ملی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیقات کے مطابق مبینہ طور پر تین ملزمان قتل میں ملوث ہیں، جنہوں نے گلالئی کو قتل کر کے لاش کھیتوں میں پھینک دی۔ ملزمان کی نشاندہی گلالئی کی بہن نے کی۔

 

ڈی پی او مردان کے مطابق دو ملزمان کو گرفتار جب کہ ملزمان سے واردات میں استعمال ہونے والی گاڑی بھی برآمد کرلی گئی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ واقعے سے متعلق مزید تفتیش جاری ہے۔ قتل کا مقدمہ تھانا شیخ ملتون میں درج کرلیا گیا ہے۔

اس سے قبل بھی خیبر پختونخوا میں شوبز سے وابستہ متعدد اداکاروں پر حملے اور قتل کے واقعات رونما ہوئے ہیں۔ رواں ماہ فروری کے آغاز میں مردان ہی کے علاقے شیخ ملتون ٹاؤن میں نامعلوم ملزمان نے مقامی اسٹیج اداکارہ سنبل کو گھر میں گھس کر قتل کر دیا تھا۔

سابق شوہرنے مقامی رقاصہ کوگھرمیں گھس کرقتل کردیا

ایس ایس پی آپریشنز گل نواز خان کا کہنا تھا کہ ابتدائی تفتیش میں انکشاف ہوا ہے کہ تینوں ملزمان اداکارہ کو اپنے ساتھ لے جانا چاہتے تھے تاہم انکار پر ملزمان اور اداکارہ کے درمیان تلخ کلامی ہوئی جس پر ملزمان نے فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں اداکارہ سنبل موقع پر ہی جاں بحق ہوگئی۔

اسٹیج اداکارہ قاتلانہ حملے میں جاں بحق

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ گزشتہ برس عورت فاؤنڈیشن کی جانب سے جاری رپورٹ کے مطابق خیبر پختونخوا میں خواتین پر گھریلو تشدد اور قتل کے واقعات میں خوفناک حد تک اضافہ ریکارڈ ہوا۔ گزشتہ سال کے آغاز میں صرف 6 ماہ کے اندر 170 خواتین کو موت کے گھاٹ اتارا گیا، جن میں غیرت کے نام پر ہونے والے واقعات کا تناسب انتہائی زیادہ ہے۔ سال 2018 میں پشتو کی 3 معروف گلوکاراؤں کو موت کے منہ میں دھکیل دیا گیا۔

اسٹیج اداکارہ غیرت کےنام پرقتل

پولیس کے اعداد و شمار کے مطابق 2017 میں جنوری سے جون تک 121 خواتین کو قتل کیا گیا جن میں غیرت کے نام قتل پر ہونے والی خواتین کی تعداد 24 ہے۔ باقی ماندہ کو گھریلو ناچاقیوں اور دیگر تنازعات کے باعث موت کے منہ میں دھکیلا گیا۔ اسی سال صرف 6 ماہ میں خواتین پر تشدد کے مجموعی طور پر 786 واقعات رپورٹ ہوئے۔

 

سال 2016 میں مجموعی طور پر 255 خواتین کو موت کی نیند سلایا گیا جن میں غیرت کے نام پر قتل کے واقعات کی تعداد 44 ہے جبکہ اسی سال خواتین پر تشدد کے 1716 واقعات سامنے آئے۔ ان اعداد و شمار کا تجزیہ کرنے کے بعد یہ نتیجہ نکلتا ہے کہ 2017 کے مقابلے میں رواں سال خواتین پر گھریلو تشدد اور قتل کے واقعات میں 29 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں