کراچی،ڈیفنس کے علاقے میں پی ایس پی رہنما پر فائرنگ

February 10, 2019

پاک سر زمین پارٹی (پی ایس پی) کے رہنما میر عتیق تالپور کا کہنا ہے کہ وہ اپنے اہل خانہ کے ہمراہ جا رہے تھے کہ نامعلوم افراد نے ان پر فائرنگ کی۔

پولیس کے مطابق میر عتیق نے انہیں بتایا کہ فائرنگ کا واقعہ درخشاں تھانے کی حدود فیز 6 میں پیش آیا۔ میر عتیق کے مطابق وہ اپنی فیملی کے ساتھ تھے کہ کرولا گاڑی میں سوار افراد نے ان پر فائرنگ کردی۔ گاڑی میں موجود چاروں افراد مسلح تھے۔ واقعہ کی ایف آئی آر درخشاں تھانے میں درج کرادی گئی ہے۔

آئی جی سندھ ڈاکٹر سید کلیم امام نے میرعتیق تالپور پر فائرنگ کے حوالے سے میڈیا رپورٹس پر ایس ایس پی ساؤتھ سے جامع انکوائری اور تمام تر پولیس اقدامات پر مشتمل رپورٹ طلب کرلی۔ دوسری جانب چیئرمین پاک سر زمین پارٹی (پی ایس پی) سید مصطفیٰ کمال نے واقعے کی سخت مذمت کی ہے۔ واضح رہے کہ میر عتیق حیدرآباد کے حلقے پی ایس 67 سے پی ایس پی کے ٹکٹ پر انتخاب لڑے تھے۔

 

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ڈیفنس ہی میں ایم کیوایم کے رہنماعلی رضا عابدی کوقتل کیا گیا، جب کہ ڈیفنس میں ہی سابق گورنر محمد زبیر پر بھی فائرنگ کا واقعہ پیش آچکا ہے۔

ڈیفنس کے علاقے میں اہم شخصیات کے قتل پر ایک نظر

تاریخ دیکھیں تو دہشت گردوں نے ڈیفنس میں کئی شاہراہوں کو مقتل گاہ بنایا۔

۔25دسمبر2018

ایم کیوایم کے سابق ایم این اے علی رضا عابدی

۔24اپریل2015

سماجی رہنما سبین محمود

۔18مئی2013

پی ٹی آئی کی زہرہ شاہد

۔22جولائی2008

وہی ڈیفنس کی شاہراہ۔۔ ایک اورسیاسی رہنما

پیپلزپارٹی کے خالد شہنشاہ

۔27اپریل2002

ایم کیوایم کے رہنما نوشاد کمال اور سینیٹرمصطفیٰ رضوی

اور 5جولائی1997

ایم ڈی کے ای ایس سی شاہدحامد

ن تمام رہنماؤں کو ڈیفنس میں ہی گھر کے باہر فائرنگ کر کے قتل کیا گیا۔ تمام واقعات کا ایک ہی طریقہ واردات تھا۔۔