Saturday, October 31, 2020  | 13 Rabiulawal, 1442
ہوم   > Latest

لورالائی پولیس کمپلیکس پر دہشت گردوں کا حملہ، 9 افراد شہید، 21 زخمی

SAMAA | - Posted: Jan 29, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Jan 29, 2019 | Last Updated: 2 years ago

بلوچستان کے ضلع لورالائی میں دہشتگردوں کی جانب سے ڈ ی آئی جی کے دفتر پر حملہ کیا گیا۔ فائرنگ اور  بم  دھماکوں کے نتیجے میں پولیس اہلکاروں سمیت 9 افراد شہید اور 21 افراد زخمی ہوگئے۔ لورالائی میں پولیس کمپلیکس پر دہشت گردوں نے حملہ کردیا، واقعے میں 9 افراد شہید اور 21 زخمی...

بلوچستان کے ضلع لورالائی میں دہشتگردوں کی جانب سے ڈ ی آئی جی کے دفتر پر حملہ کیا گیا۔ فائرنگ اور  بم  دھماکوں کے نتیجے میں پولیس اہلکاروں سمیت 9 افراد شہید اور 21 افراد زخمی ہوگئے۔

لورالائی میں پولیس کمپلیکس پر دہشت گردوں نے حملہ کردیا، واقعے میں 9 افراد شہید اور 21 زخمی ہوگئے، آئی ایس پی آر کے مطابق حملے کے وقت 800 افراد موجود تھے، عمارت کو کلیئر کرالیا گیا، جوابی کارروائی میں 2 خودکش بمبار مارے گئے ایک نے خود کو دھماکے سے اڑالیا۔

پاک فوج کے ترجمان ادارے کی جانب سے جاری اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے لورالائی میں ڈی آئی جی کمپلیکس دہشت گردوں سے کلیئر کرالیا گیا، آپریشن کے دوران تمام دہشت گرد مارے گئے، 3 مسلح خودکش بمباروں نے کمپلیکس میں داخل ہونے کی کوشش کی، ایک نے خود کو دھماکے سے اڑالیا، 2 جوابی کارروائی میں مارے گئے۔

آئی ایس پی آر نے مزید بتایا کہ حملے کے وقت کمپاؤنڈ میں 800 افراد موجود تھے، حملے میں 9 افراد شہید اور 21 زخمی ہوئے، شہداء میں 3 پولیس اہلکار اور 6 عام شہری شامل ہیں، زخمیوں کو سی ایم ایچ کوئٹہ منتقل کردیا گیا۔

لورالائی سے سماء کے نمائندے بلاول کاکڑ کے مطابق لورالائی کے علاقے کوئٹہ روڈ پر واقع ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس ژوب ریجن کے دفتر پر دہشتگردوں نے اس وقت حملہ کردیا جب وہاں پولیس میں جونیئر کلرک اور درجہ چہارم کی بھرتی کیلئے امیدواروں کے انٹرویوز ہورہے تھے، دہشتگردوں نے بم حملہ کیا اور  اندھا دھند فائرنگ کی۔

فائرنگ اور دھماکوں کے بعد دفتر کے اندر اور باہر بڑی تعداد میں جمع امیدواروں اور پولیس اہلکاروں میں بھگدڑ مچ گئی، دفتر کی حفاظت پر مامور پولیس اہلکاروں نے جوابی کارروائی کی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حملہ آور ڈی آئی جی دفتر کے اندر داخل ہوئے، حملے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی اضافی نفری، ایف سی اور لیویز اہلکار بھی موقع پر پہنچ گئے، انہوں نے دفتر کو گھیرے میں لیا۔ پولیس حکام کے مطابق ڈی آئی جی لورالائی نثار احمد سمیت دیگر پولیس افسران اور امیدواروں کو بحفاظت دفتر سے نکال لیا گیا۔

حکام کا کہنا ہے کہ حملے میں زخمی ہونے والے اہلکاروں کو سول اسپتال لورالائی منتقل کیا گیا، جہاں  ڈاکٹرز، طبی عملے اور سہولیات کی کمی کا سامنا کرنا پڑا۔ سول اسپتال لورالائی کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد فہیم کاکڑ نے سماء سے ٹیلیفون پر گفتگو کرتے ہوئے تصدیق کی کہ اسپتال میں 2 شہید پولیس اہلکاروں کی لاشیں لائی گئی ہیں، 21 زخمیوں کو بھی لایا گیا جن میں پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔ زخمیوں میں 4  کی حالت تشویشناک ہے۔

پولیس کے مطابق شہید اہلکاروں کی شناخت اے ٹی ایف کے حوالدار صادق علی اور بلوچستان کانسٹیبلری کے سپاہی غلام محمد کے نام سے ہوئی ہیں، زخمی ہونےوالوں میں اکثریت پولیس اہلکاروں کی ہے، انٹرویوز کیلئے آنے والے امیدوار بھی حملے میں زخمی ہوئے ہیں۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube