Tuesday, September 21, 2021  | 13 Safar, 1443

ایک انار سو بیمار،سول اسپتال میں300 آسامیاں،امیدوار 20 ہزار

SAMAA | - Posted: Jan 13, 2019 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Jan 13, 2019 | Last Updated: 3 years ago

سول اسپتال کراچی میں گریڈ ایک سے پانچ تک کی آسامیوں کے لئے انٹرویوز بدنظمی کا شکارہوگئے۔ 300 آسامیوں پرمعذور افراد اور خواتین سمیت 20 ہزار سے زائدخواہشمند انٹرویو دینے پہنچ گئے۔ رکن سندھ اسمبلی عبدالرشید نے تاریخ میں توسیع کا مطالبہ کر دیا جبکہ ایم ایس سول اسپتال نے یقین دلایا کہ تمام اميدواروں کا...

سول اسپتال کراچی میں گریڈ ایک سے پانچ تک کی آسامیوں کے لئے انٹرویوز بدنظمی کا شکارہوگئے۔ 300 آسامیوں پرمعذور افراد اور خواتین سمیت 20 ہزار سے زائدخواہشمند انٹرویو دینے پہنچ گئے۔ رکن سندھ اسمبلی عبدالرشید نے تاریخ میں توسیع کا مطالبہ کر دیا جبکہ ایم ایس سول اسپتال نے یقین دلایا کہ تمام اميدواروں کا انٹرويو ليا جائے گا۔

نوکری کی آس لگائے آنے والوں میں معذور افراد کے علاوہ خواتین کی بھی بڑی تعداد شامل تھی جو اپنے معصوم بچے بھی ساتھ لائی تھیں ، زیادہ ترخواتین نے انتظامات کو انتہائی ناقص قرار دیا۔

اتنی بڑی تعداد میں افراد کے آجانے سے بدنظمی یقینی تھی جس کے بعد دھکم پیل کے باعث پولیس کو لاٹھی چارج بھی کرنا پڑا۔ اس دوران بھگدڑ مچنے سے متعدد افراد اسپتال کی چھتوں اور دروازوں پر بھی چڑھ گئے، جس طرف نگاہ ڈالیں سر ہی سر نظرآئے۔

 

ہجوم ميں ويل چيئر پر آنے والے معذور افراد بھي شامل تھے جن کا مطالبہ تھا کہ ہمیں معذوروں کے کوٹے پر ملازمت فراہم کی جائے۔

 

سول اسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر صابر میمن نے نمائندہ سما سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہماری توقع تھی کہ انٹرویو دینے کے لیے 10 ہزار تک امیدوار آجائیں گے لیکن یہ 20 سے 22 ہزار کا مجمع ہے جو ہمارے توقع سے بھی دگنا ہے۔

 

شور شرابے پر رکنِ سندھ اسمبلي عبدالرشيد بھي موقع پر پہنچے اور بولے کہ اتنی بڑی تعداد میں لوگ موجود ہیں، جن کا فارم جمع نہیں ہوا، انہیں وزیراعلیٰ کے دروازے پر جانا چاہیئے کہ فارم کیوں جمع نہیں ہوا۔

 

بدنظمی کے باوجود انتظاميہ کا کہنا ہے کہ چاہے رات ہوجائے مگر تمام ميدواروں کا انٹرويو کيا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube