Tuesday, December 7, 2021  | 2 Jamadilawal, 1443

سیوریج کا گندہ پانی دریائے چناب میں ڈالے جانے سے آبی حیات خطرے میں پڑ گئی

SAMAA | - Posted: Jan 3, 2019 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Jan 3, 2019 | Last Updated: 3 years ago

ملتان میں گندا اور زہریلا سیوریج کا پانی بغیر ٹریٹمنٹ کے دریائے چناب ڈالا جارہا ہے،سیوریج کے پانی سے آبی حیات ختم ہوتی جارہی ہےجب کہ کٹاؤ کی وجہ سے سیکڑوں ایکڑ زرعی زمین دریا برد ہوچکی ہے۔ ملتان میں جھاگ اڑاتا سیوریج کا زہریلا پانی واسا کی مہربانی سے بغیر ٹریٹمنٹ کے دریائے چناب میں شامل...

ملتان میں گندا اور زہریلا سیوریج کا پانی بغیر ٹریٹمنٹ کے دریائے چناب ڈالا جارہا ہے،سیوریج کے پانی سے آبی حیات ختم ہوتی جارہی ہےجب کہ کٹاؤ کی وجہ سے سیکڑوں ایکڑ زرعی زمین دریا برد ہوچکی ہے۔

ملتان میں جھاگ اڑاتا سیوریج کا زہریلا پانی واسا کی مہربانی سے بغیر ٹریٹمنٹ کے دریائے چناب میں شامل کیا جارہا ہے۔

ڈپٹی مینیجنگ ڈائریکٹر واسا کہتے ہیں کہ سیوریج کا پانی ٹریٹمنٹ کے زریعے ہی  چناب دریا میں ڈال رہے ہیں جو کہ 100 کیوسک پانی ہے۔

دوسری جانب ملتان میں کروڑوں روپے کا ٹریٹمنٹ پلانٹ لگا کر بھی کوئی فائدہ نہ ہوا اور گندے پانی سے آبی حیات اور ماہی گیروں کا روزگار بھی ختم ہوتا جارہا ہے اور کٹاؤ کے باعث  سیکڑوں ایکڑ زرعی زمین دریا برد ہوچکی ہے ۔

محکمہ ماحولیات کے زمہ داران کا کہنا ہے کہ پورے پنجاب کے لئے یہ پالیسی بنانی چاہئے تاکہ ویسٹ واٹر کو نہروں دریاوں میں ڈالنے کی بجائے ٹریٹ کریں اور زراعت کے لئے استعمال کریں۔

حکومت اور واسا کی عدم دلچسپی کے باعث سیوریج کا گندا پانی دریائے چناب میں ڈالنے سے آبی حیات ختم ہو گئیں ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube