Tuesday, November 24, 2020  | 7 Rabiulakhir, 1442
ہوم   > Latest

ایڈن گارڈن کیس، اسکيم کی وجہ سے آدھا لاہور لٹ گيا، چیف جسٹس

SAMAA | - Posted: Jan 1, 2019 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Jan 1, 2019 | Last Updated: 2 years ago

سپريم کورٹ نے ایڈن گارڈن ہاؤسنگ اسیکم کے متاثرین کی فریاد سن لی، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اسکیم کی وجہ سے آدھا لاہور لٹ گیا، فوج کا کام ریاست کو مضبوط کرنا ہوتا ہے، پرانے معاہدے ختم کرکے نیا معاہدہ کروائیں گے۔ چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے پاک فوج کیجانب سے زمین...

سپريم کورٹ نے ایڈن گارڈن ہاؤسنگ اسیکم کے متاثرین کی فریاد سن لی، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ اسکیم کی وجہ سے آدھا لاہور لٹ گیا، فوج کا کام ریاست کو مضبوط کرنا ہوتا ہے، پرانے معاہدے ختم کرکے نیا معاہدہ کروائیں گے۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے پاک فوج کیجانب سے زمین کے لین دین پر شدید برہمی کا اظہار کردیا۔ کہتے ہیں کہ آرمی اورڈی ایچ اے کا کیا کام ہے کہ وہ ہاؤسنگ منصوبے بنائے؟، کیوں فوج کو مقدمہ بازی میں لگایا گیا؟، فوج جب بھی کمرشل سرگرمیوں میں آئی متنازع ہوئی۔

ایڈن گارڈن ہاؤسنگ فراڈ کیس کی سماعت کے دوران جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ 11 ہزار 716 افراد لوگ ایڈن گارڈن کے متاثرین ہیں، اسکیم کی وجہ سے آدھا لاہور لٹ گیا۔

چیف جسٹس نے پوچھا ڈی ایچ اے کے کس جنرل نے ایڈن گارڈن والا معاہدہ کیا؟۔ ڈی ایچ اے حکام نے جواب دیا کہ جنرل بخشی نے، بھی بتایا کہ پاک فوج شہداء کیلئے گھر بنانا چاہتی تھی۔

چیف جسٹس بولے شہداء اور جوانوں کیلئے گھر بنانے ہیں تو حکومت کو کہیں، فوج کا کام ہوتا ہے ریاست کو مضبوط بنانا۔

چیف جسٹس نے کہا کہ فراڈ سے متعلق ہزاروں درخواستیں آئیں، ہم نے متاثرین کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے، ڈی ایچ اے کو کھلی چھٹی بھی نہیں دے سکتےْ

وہ بولے کہ ہاؤسنگ کی ذمہ داری ڈی ایچ اے کو دیدیں گے، ایڈن گارڈن کے مفاد کو بھی مد نظر رکھیں گے۔ عدالت نے ہاؤسنگ منصوبے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube