Thursday, October 28, 2021  | 21 Rabiulawal, 1443

علی رضا عابدی کا خواب ادھورا رہ گیا

SAMAA | - Posted: Dec 26, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Dec 26, 2018 | Last Updated: 3 years ago

کچھ ہفتے قبل میں ایم کیو ایم میں اندرونی اختلافات کے حوالے سے ایک خبر پر کام کررہا تھا، میں نے علی رضا عابدی کو فون کیا تو وہ اپنے ریسٹورنٹ پر موجود تھے۔

انہوں نے میری کال اٹھائی اور کہا کہ میں نے کبھی تمھیں منع کیا ہے تم جب چاہو رات 11 بجے کے بعد میرے ریسٹورنٹ پر آجاؤ ۔

میں فیرئر پولیس اسٹیشن روڈ کے قریب ان کے ریسٹورنٹ پر پہنچ گیا ، وہ وہاں اپنے کچھ دوستوں کے ساتھ موجود تھے اور پارٹی کے معاملات پر گفتگو کرہے تھے ۔

علی رضا عابدی نے حال ہی میں ہونے والے انتخابات میں عمران خان کے خلاف کراچی کے حلقے این اے 243 سے الیکشن میں حصہ لیا تھا جس میں انہیں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا تاہم ان کے پارٹی چھوڑنے کی یہ وجہ نہیں تھی ۔

ایم کیو ایم پاکستان کے سابق رکن قومی اسمبلی پارٹی کے ذمہ داروں سے خوش نہیں تھے ان کا خیال تھا کہ جنرل الیکشن میں شکست کی اہم وجہ پارٹی رہنماوں کے آپس میں اختلافات ہیں ۔

علی رضا عابدی اس وقت اپنی پارٹی کو متحد کرنے کے لئے ایک مصالحتی کمیشن تشکیل دینے کی منصوبہ بندی کررہے تھے اور اس حوالے سے انہوں نے ایم کیو ایم کے مختلف دھڑوں کے کئی رہنماؤں سے ملاقات کی اور وہ سب کو ایک ایم کیو ایم کے سائے تلے جمع کرنے کی کوشش کررہے تھے۔

عابدی ایم کیو ایم پاکستان کے نوجوان ووٹرز میں بہت زیادہ مقبول تھے کیونکہ وہ ایک عاجز مزاج شخصیت تھے۔

کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں اپنے انتخابی مہم کے دوران وہ بہت زیادہ سرگرم تھے انہوں نے ایک موثر انتخابی مہم چلانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی تھی ۔

وہ سڑک کے کنارے ہوٹل پر بیٹھے تھے اسی دوران ایک پارٹی ورکر نے ایک ناراض کارکن کے بارے میں بتایا جو قریب ہی واقع ایک بلڈنگ میں رہتا تھا عابدی کھڑے ہوئے اور کہا کہ ہمیں اس سے ملنا چاہیے ۔

ان کے کارکن نے کہا کہ وہ شخص ساتویں منزل پر رہتا ہے اور بلڈنگ کی لفٹ بھی کام نہیں کرتی ، انہوں نے صرف اتنا کہا کہ مجھے راستہ بتاؤ ۔

وہ بلڈنگ میں گئے اور اپنے کارکنان کو نیچے رکنے کیلئے کہا، آدھے گھنٹے کے بعد وہ ایک اور شخص کے ساتھ واپس آئے اس شخص نے مسکراتے ہوئے کہا کہ میں صرف علی بھائی کو ووٹ ہی نہیں دوں گا بلکہ علاقے میں ان کی انتخابی مہم بھی چلاؤں گا ۔

علی رضا عابدی اب ہم نہیں رہے منگل کی شام کراچی کے علاقے خيابان غازی ميں ان کے گھر کے باہر نامعلوم افراد نے فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں وہ جاں بحق ہوگئے اور ایم کیو ایم کو متحد کرنے کا ان کا خواب ادھورا ہی رہ گیا۔

یہاں تک کہ ایم کیو ایم کے مخالف بھی علی رضا عابدی کو پسند کرتے تھے کیونکہ وہ ایک اچھا حس مزاح رکھنے والے انسان تھے ان کا شمار ایم کیو ایم کے سمجھدار رہنماؤں میں ہوتا تھا ۔

 

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube