Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

کراچی،ہزارہ کالونی میں ریلوےکی اراضی پرآپریشن ایک جان لے گیا

SAMAA | - Posted: Dec 22, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Dec 22, 2018 | Last Updated: 3 years ago

ہزارہ کالونی میں تجاوزات کے خلاف آپریشن کے دوران ایک دکان دار دل کا دورہ پڑنے سے جان سے چلا گیا۔

کراچی میں کالا پل کے نزدیک ہزارہ کالونی میں ریلوے کی اراضی پر قائم تجاوزات کے خلاف آپریشن جاری تھا۔21 دسمبر کو صبح  ساڑھے نو بجے ریلوے کی ٹیم پولیس اور مشینری کے ہمراہ پہنچی اور تجاوزات کومسمار کرنا شروع کیا۔ اس میں وہ عمارتیں بھی زد میں آئیں جن کے اوپر مکانات اور نیچے دکانیں ایک ساتھ قائم تھیں ۔

سپریم کورٹ نے حکم دیا تھا کہ تجاوزات کے زمرے میں آنے والے رہائشی مکانات کو نہ توڑا جائے تاہم ایسے مکانات کے بارے میں کوئی حکم نہیں تھا جن کے نچلے حصے میں دکانیں قائم ہوں۔

ہزارہ کالونی میں آپریشن کے اطلاع جب ایک دکان دارپرویزاختر تک پہنچی تو اس کو دل کا دورہ پڑگیا۔علاقہ مکین اس کو فوری طور پر جناح اسپتال لے کر گئے مگر وہ راستے میں ہی دم توڑ دیا۔

پرویز اختر کی موت کے بعد علاقے میں کشیدگی پھیل گئی۔ ریلوے حکام کے علاقے میں آتے ہی لوگ بلڈوزر پر چڑھ گئے اور ریلوے ٹیم کو کام کرنے سے روک دیا۔

ان کا مطالبہ تھا کہ سپریم کورٹ کے حکم کے تحت پہلے لوگوں کی منتقلی کا انتظام کیا جائے۔صورتحال کی نزاکت بھانپتے ہوئے،ایس ایس پی ساؤتھ پیر محمد شاہ،ایس ایس پی ریلوے شہلا قریشی،پاکستان ریلوے کے نمائندےامتیاز صدیقی اور ڈپٹی کمشنر ساؤتھ ہزارہ کالونی پہنچ گئے۔

مظاہرین سے مذاکرات کے بعد یہ طے کیا گیا کہ تجاوزات کے زمرے میں آنے والی ان دکانوں کو نہیں مسمار کیا جائے گا جن کے اوپر مکانات  قائم ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube