Tuesday, January 18, 2022  | 14 Jamadilakhir, 1443

چارسدہ کے تباہ شدہ تمام اسکول دوبارہ کھول دیئے گئے

SAMAA | - Posted: Nov 29, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 29, 2018 | Last Updated: 3 years ago

خیبرپختونخوا کے ضلع چارسدہ میں زلزلہ، سیلاب اور دہشت گردی سے تباہ ہونے والے 3 ہزار اسکولوں میں سے آخری اسکول بھی دوبارہ کھول دیا گیا۔

محکمہ تعلیم حکام نے جمعرات کو بتایا کہ چارسدہ کا گورنمنٹ بوائز پرائمری اسکول ترنگزئی زمین کے تنازع کے باعث کافی عرصہ سے بند تھا، جسے دوبارہ کھولا جارہا ہے۔

ڈی ای او سراج محمد نے بتایا کہ جب یہ اسکول بند ہوا تو اس میں 2010ء میں 280 طلبہ تھے تاہم 2018ء میں یہ تعداد کم ہو کر 129 رہ گئی۔

چارسدہ میں غیر فعال اسکولوں کی بڑی تعداد ہوتی تھی لیکن آج زمین مالکان سے کامیابی مذاکرات کے بعد یہاں ایسا آخری اسکول بھی دوبارہ کھلنے جارہا ہے، چارسدہ میں اب ایسا کوئی اسکول نہیں جو بند یا غیر فعال ہو۔

محکمہ تعلیم کے مطابق 2015ء میں پورے خیبرپختونخوا میں 275 پرائمری، مڈل اور ہائی اسکول غیر فعال تھے، جس میں سے 160 میں لڑکیاں اور 115 میں لڑکے زیر تعلیم تھے، چارسدہ کے 4 اسکولوں سمیت یہ تمام تعلیمی ادارے اساتذہ کی غیر موجودگی اور زمین کے تنازعات کے باعث بند اور غیر فعال تھے۔

محکمہ تعلیم کی الف اعلان کے تعاون سے تیار کی گئی رپورٹ کے مطابق خیبرپختونخوا کے 3 ہزار اسکول زلزلہ، سیلاب اور دہشت گرد کارروائیوں کے دوران تباہ ہوئے تھے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube