بزنس گالہ،پوزیشن واضح کریں،اقتدار کی فکر

SAMAA | - Posted: Nov 29, 2018 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 29, 2018 | Last Updated: 2 years ago

جامع تربت گوادر کیمپس میں دو روزہ بزنس گالہ کاآغاز کر دیا گیا ہے

رپورٹ:شریف ابراہیم،گوادر

جامع تربت گوادر کیمپس میں دو روزہ بزنس گالہ کاآغاز کر دیا گیا ہے ۔ بزنس گالہ کا افتتاح گوادر کیمپس میں جامع تربت کے وائس چانسلر ڈاکٹر عبدالرزاق صابر نے کیابزنس گالہ میں یونیورسٹی کے طلباء وطالبات نے مختلف اسٹال لگائے جن میں بلوچی دستکاری کھانے پینے کے اشیاء کے ساتھ کتب کے اسٹال شامل تھے بزنس گالہ میں   میوزیکل اور تھیٹر شو کا بھی انعقاد کیا گیا تھا جبکہ بچوں کیلئے مختلف گیمز بھی بزنس گالہ کا حصہ تھےافتتاحی تقریب میں جی پی اے کے چیئر مین دوستین خان جمالد ینی، کمانڈرویسٹ پاک نیوی کموڈور سید فیصل علی شاہ، چیئر مین بلد یہ گوادر عابد رحیم سہرابی، جی پی اے کے ڈائریکٹر جنرل ایڈ من منیر جان، ڈائر یکٹر جنرل فنانس شفیع بلوچ، جامع تربت کے رجسٹرار تنویر ودار اور ڈائر یکٹر گوادر کیمپس اعجاز احمد بلوچ نے بھی شرکت کی۔

وزیراعلیٰ کی ترجمان بی اے پی میں اپنی پوزیشن واضح کریں،امان اللہ نوتیزئی

رپورٹ:سما ڈیجیٹل

سابق صوبائی وزیر سخی میر امان اﷲ نوتیزئی نے وزیراعلیٰ کی ترجمان کی جانب سے ان کے پارٹی سے استعفیٰ دینے کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہاہے کہ موصوفہ پہلے بی اے پی میں اپنی پوزیشن واضح کریں کہ ان کی پارٹی کے قیام کے وقت کیا کردار رہا اورانہوں نے کونسی قربانیاں دیں، انہوں نے کہاکہ بی اے پی کی تشکیل (ق) لیگ کے ارکان نے اس وقت کی تھی جب (ن) لیگ کے بعض ساتھیوں سے ملکر صوبے میں تبدیلی لائی تھی ہم ق لیگ کے ارکان 2002ء تین وزراء اعلیٰ کے ساتھ اقتدارمیں رہ چکے ہیں 2002ء میں جام یوسف مرحوم‘ پھر 2008ء کے الیکشن کے بعد 22ارکان کے ساتھ نواب محمداسلم رئیسانی کی حکومت کاحصہ بنےاور 2013ء کے الیکشن کے بعد ڈاکٹرعبدالمالک بلوچ اور نواب ثناء اللہ زہری کے ساتھ حکومت میں شامل رہے اس حوالےسے ریکارڈ درست کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی اے پی کی حکومت میں کوئی بات ضرور ہے کہ اسپیکر اور وزراء تک مستعفی ہونے کی دھمکیاں دے رہے۔

بلوچستان اسمبلی میں بیٹھے لوگوں کواقتدار کی فکر ہے، اخترمینگل

رپورٹ:سما ڈیجیٹل

 بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل) کے سربراہ اختر جان مینگل نے کہا ہے کہ بلوچستان اسمبلی میں بیٹھے لوگوں کواقتدار کی فکر ہے کوئٹہ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے بلوچستان نیشنل پارٹی کے قائد نے کہا کہ بلوچستان اسمبلی میں بیٹھے لوگوں کواقتدار کی فکر ہے، یہ لوگ لاپتہ افراد کے معاملے پر کوئی توجہ نہیں دے رہے، صوبائی اور وفاقی حکومت کو بار بار اس بارے میں آگاہ کیا جاتا رہا مگر کسی نے توجہ نہ دی اختر مینگل نے کہا کہ لاپتہ افراد کا معاملہ اقتدار میں بیٹھے لوگوں کے منہ پر طمانچہ ہے، یہاں خواتین اور بچے اپنے عزیز اقارب کی گمشدگی کے حوالے سے احتجاج کررہے ہیں مگر کوئی توجہ نہیں دے رہا ہم نے لاپتہ افراد کی جو فہرست فراہم کی ہے اس پر عمل درآمد ضروری ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube