Tuesday, October 26, 2021  | 19 Rabiulawal, 1443

کراچی پریس کلب میں نامعلوم مسلح افراد کا داخلہ ، صحافی سراپا احتجاج

SAMAA | - Posted: Nov 10, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 10, 2018 | Last Updated: 3 years ago

Photo courtesy: Zia ur Rehman

کراچی پریس کلب کے باہر صحافیوں نے نامعلوم اسلحہ بردار افراد کے زبردستی داخل ہونے کیخلاف احتجاج کیا۔

کراچی پریس کلب کے جوائنٹ سیکریٹری نعمت خان کے مطابق وہ 14اگست کے موقع پر کام کرنے والے رضاکاروں کے اعزاز میں منعقدہ ایک تقریب میں مصروف تھے جب تین سے چار افراد پریس کلب کی چھت پر آ پہنچے۔ ان کا کہنا ہے کہ اسلحہ بردار افراد کسی عمران نامی شخص کو تلاش کر رہے تھے۔

نعمت خان کہتے ہیں کہ اس وقت ان کے اردگرد تقریبا 50سے زائد صحافی موجود تھے انہوں نے بتایا کہ اسلحہ برادر افراد عمران نامی شخص کو فون کر رہے تھے لیکن اس فون بند جارہا تھا ۔

جمعرات کی رات کو کراچی پریس کلب کی جانب سے جاری کردی پریس ریلیز کے مطابق 10:30 بجے اچانک سادہ لباس میں درجنوں مسلح افراد نے گھس کر صحافیوں کو ہراساں کیا اور مختلف کمروں ، کچن ، عمارت کی بلائی منزل اور اسپورٹس ہال کا جائزہ لیا ۔

کراچی پریس کلب کے صدر احمد خان ملک اور سیکریٹری مقصود یوسفی نے اس واقعہ کو کراچی پریس کلب کا تقدس پامال کرنے کی سازش قرار دیا ۔

ایڈشنل آئی جی کراچی ڈاکٹر امیر احمد شیخ نے اس واقع کی فوری تحقیقات کرانے کا وعدہ کیا ہے ۔

ایک صحافی جو اس وقت وہاں موجود تھے کہتے ہیں کی اسلحہ بردار افراد کے ہاتھوں میں موبائل کیمرے اور لوکیٹر موجود تھے۔ پریس کلب کے ملازمین جب ان سے ویڈیوز بنانے کی وجہ پوچھی تو انہیں کہا گیا کہ وہ اپنے کام سے کام رکھیں۔

پریس کلب کے عہدیداروں نے جب اس واقعے کے حوالے سے اعلی حکام سے رابطہ کیا تو انہیں بتایا گیا کہ مسلح افراد کسی ہائی پروفائل ٹارگیٹ کی کھوج میں پریس کلب پہنچے تھے۔

جمعے کے روز سیکریٹری مقصود یوسفی نے صحافیوں کو مطلع کیا کہ ایس ایس پی ساؤتھ نے واقعے کے حوالے سے معافی مانگ لی ہے اور کہا ہے کہ مسلح افراد کا تعلق ان کی ایک ’سسٹر آرگنائزیشن‘سے تھا اور وہ کسی کو ڈھونڈتے ہوئے وہاں پہنچے تھے۔

کراچی پریس کلب میں رونما ہونا والے اس واقعے کی گونج سینیٹ کے اجلاس میں بھی سنائی دی۔ نیشنل پارٹی کے رہنما سینیٹر حاصل بزنجو نے ایوان کو بتایا کہ کچھ مسلح افراد نے کراچی پریس کلب میں گھس کر صحافیوں سے بدتمیزی بھی کی۔

چئیرمین سینیٹ نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سندھ حکومت کو کہا ہے کہ وہ اس واقعے سے متعلق رپورٹ تیار کریں اور وہ اس حوالے سے وزارت داخلہ سے بھی رابطہ کریں گے۔

 

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube