Saturday, August 8, 2020  | 17 Zilhaj, 1441
ہوم   > Latest

مولانا سمیع الحق کا قتل: تعزیت کے لیے رہنماؤں کی آمد کا سلسلہ جاری

SAMAA | - Posted: Nov 4, 2018 | Last Updated: 2 years ago
SAMAA |
Posted: Nov 4, 2018 | Last Updated: 2 years ago

جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق کی تعزیت کے لیے ملک بھر سے کارکنان و مریدین انکی رہائش گاہ اکوڑہ خٹک پر آر ھے ہیں اور اس وقت لوگوں کی ایک کثیر تعداد میں دارالعوام حقانی میں موجود ہیں۔ مرکزی جنرل سیکڑیڑی فاروق احمد کہتے ہیں کہ جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی...

جمعیت علماء اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق کی تعزیت کے لیے ملک بھر سے کارکنان و مریدین انکی رہائش گاہ اکوڑہ خٹک پر آر ھے ہیں اور اس وقت لوگوں کی ایک کثیر تعداد میں دارالعوام حقانی میں موجود ہیں۔

مرکزی جنرل سیکڑیڑی فاروق احمد کہتے ہیں کہ جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی امیر کی وفات پر انکے بڑے بیٹے حامد الحق کو انکا سیاسی جانشین مقرر کردیا۔ کل پیر کو مولانا کی رسم قل کے بعد انکی دستار بندی ہوگی۔

ان کی رہائش گا اور مدرسے پر تعزیت کرنے والوں کی کثیر تعداد پہنچ رہی ہے، لوگ مولانا سمیع الحق کے خاندان سے تعزیت کررہے ہیں اور مولانا کے ایصال و ثواب کے لیے قرآنی خوانی کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔

اس وقت پورے علاقے کی فضاء پر سوگ کا عالم ہے اور کارکن شدید غم میں ڈوبے ہوئے ہیں، دوسری جانب یہاں پر سیکورٹی کے سخت ترین انتطامات کیے گئے ہیں اور پولیس کی بھاری نفری دارالعلوم حقانیہ کے اردگرد موجود ہے۔

دارالعلوم کے اندر سیکورٹی مدرسے کے رضا کاروں نے سنبھال ہوئی ہے، تعزیت کے لیے لوگوں کی آمد کا سلسلہ جاری ہے۔

متعلقہ خبر: مولانا سمیع الحق والد کے پہلو میں سپرد خاک

سابق جائینٹ چیف آف ارمی سٹاف جنرل احسان الحق نے بھی مولانا سمیع الحق کے بیٹے سے تعزیت کی اور کہا کہ مولانا کی شہادت سے پاکستان کو بڑا نقصان پہنچا ، وہ ایک محب وطن سچے پاکستانی تھے۔

چین سے آئے ہوئے ایک وفد نے دارالعلوم حقانیہ میں مولانا کی وفات پر انکے بڑے بیٹے حامد الحق سے تعزیت کی۔

پاکستان مسلم لیگ ن کے وفد نے مشاہد حسین اور عرفان صدیقی کی قیادت میں حامد الحق سے تعزیت کی اور کہا کہ مولانا سمیع الحق کی وفات ایک بڑا سانحہ ہے۔

قومی وطن پارٹی کا وفد مرکزی چیئرمین آفتاب شیرپاؤ کی قیادت میں مولانا کی تعزیت کے لیے دارالعوام حقانیہ پہنچا اور انکے خاندان سے تعزیت کی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube