آئی ایس آئی تحریک لبیک کے دھرنے کے پیچھے نہیں تھی، وزارت دفاع

October 11, 2018

تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ پاکستان کے فیض آباد دھرنے کے پیچھے آئی ایس آئی کا کوئی کردار نہیں تھا۔ وزارت دفاع نے سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرادی۔

آئی ایس آئی نے تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ پاکستان کے 21 روز طویل فیض آباد دھرنے کے پیچھے ان کے کردار سے متعلق افواہوں کو مسترد کردیا۔

وزارت دفاع کی جانب سے سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جعلی خبروں کے ذریعے یہ جھوٹا تاثر قائم کیا گیا انٹیلی جنس ادارے آئی ایس آئی کا ٹی ایل وائی پی کے دھرنے کے پیچھے کوئی کردار تھا اور مظاہرین کی کسی طرح بھی مدد کی گئی۔

تفصیلات جانیں : فیض آباد دھرنا ختم کرانے کے لیے آپریشن ، درجنوں گرفتار

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ حقیقت یہ ہے کہ آئی ایس آئی نے حکومت کی حمایت اور مسئلے کے پر امن حل کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے۔

وزارت دفاع نے اپنی رپورٹ دھرنا کیس کی سماعت کرنے والے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ اور جسٹس مشیر عالم پر مشتمل سپریم کورٹ کے 2 رکنی بینچ کے سامنے پیش کی۔

گزشتہ سال نومبر میں تحریک لبیک یا رسول اللہ ﷺ پاکستان نے الیکشن کمیشن پاکستان میں جمع کرائے جانے والے حلف نامے میں تبدیلی پر اسلام آباد کے علاقے فیض آباد میں 21 دن طویل دھرنا دیا تھا۔

دھرنے کا اختتام پاک فوج کی جانب سے ثالثی کے بعد ہوا، جس میں مظاہرے ختم کرنے اور مسلم لیگ ن کے وزیر قانون زاہد حامد کو عہدے سے ہٹانے کا معاہدہ طے پایا تھا۔

فیض آباد دھرنے سے قبل غیر معروف مذہبی سیاسی جماعت تحریک لبیک پاکستان نے پرجوش رہنماء علامہ خادم حسین رضوی کی قیادت میں 25 جولائی کے الیکشن میں 22 لاکھ سے زائد ووٹ حاصل کئے تاہم وہ چند نشستیں ہی جیتنے میں کامیاب ہوسکی تھی۔

مزید جانیے : فیض آباد دھرنا کیس؛آرمی چیف کا نام کیوں استعمال ہوا؟عدالت

وزارت دفاع کی رپورٹ کے مطابق آئی ایس آئی نے وزیراعظم کی ہدایات کی روشی میں حکومت اور ٹی ایل وائی پی کے درمیان مذاکرات میں سہولت کار کا کردار ادا کیا، حکومت آزادانہ طور پر تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ سے مذاکرات کیلئے رابطہ نہیں کرپارہی تھی، جب دھرنا طول اختیار کر گیا تو آئی ایس آئی نے دونوں فریقین سے مل بیٹھ کر مسئلے کو حل کرنے کا کہا تھا۔

رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ٹی ایل وائی پی کے فیض آباد دھرنے کیلئے منظم طور پر عوامی حمایت کی افواہیں بے بنیاد اور جھوٹ پر مبنی تھیں۔