Sunday, September 26, 2021  | 18 Safar, 1443

ججز اور سرکاری افسران کی دہری شہریت پر فیصلہ محفوظ

SAMAA | - Posted: Sep 24, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Sep 24, 2018 | Last Updated: 3 years ago

سپريم کورٹ نے ججز اور سرکاری افسران کی دہری شہریت سے متعلق از خود نوٹس کا فیصلہ محفوظ کر ليا۔ ججز اور سرکاری افسروں کی دہری شہريت سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران  چيف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ملک کو دھوکا دیکر بیرون ملک جائیدادیں بنانے والے آج بھی عہدوں پر...

سپريم کورٹ نے ججز اور سرکاری افسران کی دہری شہریت سے متعلق از خود نوٹس کا فیصلہ محفوظ کر ليا۔


ججز اور سرکاری افسروں کی دہری شہريت سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران  چيف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ملک کو دھوکا دیکر بیرون ملک جائیدادیں بنانے والے آج بھی عہدوں پر فائز ہيں، ملک کی بدنامی کا باعث بننے والوں کیساتھ کوئي رعایت نہیں ہونی چاہیئے۔

چیف جسٹس نے يہ بھي سوال اٹھايا کہ اگر اراکین پارلیمنٹ کےلئے دوہری شہریت پر پابندی ہے تو بیوروکریٹس پر کیوں نہیں؟۔

جسٹس عمرعطا بنديال نے ریمارکس دیئے کہ ایک ساتھ دو کشتیوں میں سوار نہیں ہوا جاسکتا، بعض عہدوں پر ملک سے مکمل وفاداری لازمی ہے۔ تاہم ڈاکٹرز اور اساتذہ کی دوہری شہریت میں قباحت نہیں۔

عدالتي معاون شاہد حامد نے تجويز دي کہ  سرکاری اداروں میں غير ملکي شہريت کے حامل افسر نہیں ہونے چاہیئیں۔ بہتر ہوگا عدالت، حکومت اور پارلیمنٹ کو فیصلہ کرنے دے۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد ازخود نوٹس کا فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے حکومت کو سفارشات دینے کا فیصلہ کر لیا۔ قرار دیا کہ اہم عہدوں پر غيرملکي شہريت کے حامل افسران سے متعلق تحفظات سے حکومت کو آگاہ کیا جائے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube