پرائیوٹ میڈیکل کالجز کی فیس ساڑھے نو لاکھ روپے مقرر کرنے پر اتفاق

Shehzad Ali
September 12, 2018

پرائیویٹ میڈیکل کالجوں میں فیس ساڑھے نو لاکھ روپے مقرر کرنے پر اتفاق کردیا۔ سپریم کورٹ میں فیسوں سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران وکیل پی ایم ڈی سی نے بتایا کہ 9 لاکھ 50 ہزار روپے سے فیس کم کرنا ممکن نہیں۔

سپریم کورٹ میں نجی میڈیکل کالجز کی فیسوں سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی، چیف جسٹس نے میڈیکل کالجوں کے غیر معیاری تعلیم پر سخت تشویش کا اظہار کیا اور میڈیکل کالجز کو وارننگ جاری کردی۔ عدالت کے استفسار پر وکیل پی ایم ڈی سی نے بتایا کہ نجی میڈیکل کالجز کی فیس 9 لاکھ 50 ہزار سے کم کرنا ممکن نہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ٹھیک ہے، یہی طے کر لیتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ نجی کالجز کے بغیر میڈیکل کا شعبہ آگے چل نہیں سکتا مگر چاہتے ہیں کہ کم اخراجات میں اچھے ڈاکٹر سامنے آئیں۔

جسٹس ثاقب نثار نے میڈیکل کالجز کے تعلیمی معیار پر برہمی کا اظہار کیا اور ریمارکس دیئے کہ غیر معیاری کالجز سے آنے والے ڈاکٹرز کو بلڈ پریشر تک ٹھیک سے دیکھنا نہیں آتا، عدالتی کارروائی کا مقصد شعبہ میں کمی کوتاہی کو دور کرنا ہے۔

پی ایم ڈی سی نے اکتوبر تک کالجز میں تعلیمی معیار بہتر کرنے کی یقین دہانی کروائی۔ چیف جسٹس نے واضح کر دیا کہ جو کالجز معیار کو بہتر نہ بنا سکے، اُن کو بند کردیں گے اور بھاری جرمانہ بھی کریں گے۔

عدالت عظمیٰ  نے اٹارنی جنرل کی سربراہی میں تمام فریقین کا اجلاس بلا کر مسئلے کا حل نکالنے کا فیصلہ کیا اور مزید سماعت آئندہ پیر تک ملتوی کردی۔