پی کے 23 شانگلہ، دوبارہ پولنگ میں شوکت یوسف زئی کامیاب، غیر حتمی، غیر سرکاری نتیجہ

Farhan Adil
September 10, 2018

پی کے 23 شانگلہ ون میں غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے شوکت یوسفزئی 42 ہزار 116 ووٹوں لے کر کامیاب ہوگئے، خواتین کے ووٹوں کا تناسب کم ہونے کے باعث اس حلقے میں دوبارہ پولنگ کرائی گئی تھی، اس بار خواتین ووٹرز کا تناسب 10 فیصد سے کم رہا تو حلقے میں تیسری بار پولنگ کرائی جائے گی۔

خیبرپختونخوا کے حلقہ پی کے 23 شانگلہ ون میں 25 جولائی 2018ء کو ہونیوالے عام انتخابات میں خواتین کے ووٹ مجموعی ووٹوں کے 10 فیصد سے کم ہونے پر الیکشن کمیشن پاکستان نے حلقے میں دوبارہ پولنگ کا اعلان کیا تھا۔

پی کے 23 شانگلہ ون میں آج دوبارہ پولنگ ہوئی، اطلاعات کے مطابق حلقے میں ووٹرز کا ٹرن آؤٹ 20 فیصد تک رہا جبکہ خواتین ووٹرز کا تناسب اس بار میں انتہائی کم رہنے کا امکان ہے۔

غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے شوکت یوسفزئی نے 42 ہزار 116 ووٹوں کے ساتھ کامیابی حاصل کرلی، ان کے مد مقابل مسلم لیگ ن کے محمد رشاد خان 22 ہزار 315 ووٹ لے سکے۔

پی کے 23  شانگلہ ون میں کل پولنگ اسٹیشنز کی تعداد 135 ہے، جن میں 35 حساس، 18 حساس ترین قرار دیئے گئے تھے، اس سے قبل 25 جولائی 2018ء کو ہونے والے عام انتخابات میں پی کے 23 سے پاکستان تحریکِ انصاف کے امیدوار شوکت یوسف زئی 17 ہزار 399 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے تھے، پولنگ میں صرف 3505 خواتین نے ووٹ ڈالے، دس فیصد سے کم ووٹوں پر الیکشن کمیشن نے انتخاب کالعدم قرار دے دیئے تھے۔