پاکستان کے پہلے وزیر خارجہ ظفر اللہ خان کی برسی

Samaa Web Desk
September 1, 2018

محمد ظفر اللہ خان تحریک پاکستان کے سرگرم رکن تھے، جو قیام پاکستان کے بعد پہلے وزیر خارجہ بنے، وہ 1954 تک سات سال اس عہدہ پر برقرار رہے۔ پارٹیشن سے قبل ظفر اللہ خان کو متحدہ ہندوستان کی عدالت عظمیٰ کا منصف مقرر کیا گیا، وہ آزاد مملکت کے قیام تک اس عہدہ پر فائز رہے۔ آزادی کے بعد 1947 میں ظفر اللہ خان نے اقوام متحدہ کے سامنے بطور سربارہ پاکستانی وفد پاکستان کا موقف پیش کیا۔

اسی دوران میں اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے ارکان بھی رہے۔ 1954 سے 1961 تک عرصہ عالمی عدالت انصاف میں بطور منصف فرائض سر انجام دینے کے بعد 1961 سے 1964 تک دوبارہ اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب مقرر ہوئے۔ وہ 1962 سے 1964 تک اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر بھی رہے۔ انہوں نے اقوام متحدہ میں کشمیر، فلسطین، لیبیا، شمالی آئیرلینڈ، ایریٹریا، صومالیہ، سوڈان، تیونس، مراکش اور انڈونیشیا کی آزادی کے لیے کام کیا۔

 

ایک لمبا عرصہ نیدرلینڈ اور برطانیہ میں رہائش کے بعد واپس پاکستان آئے اور لاہور میں رہائش اختیار کی۔ جہاں اور 1 ستمبر 1985 کو میں وفات پائی۔