دھاندلی کی شکایات،سرداراخترمینگل کابھی کمیشن بنانےکامطالبہ

SAMAA | - Posted: Aug 17, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 17, 2018 | Last Updated: 3 years ago

بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ نے قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ الیکشن واحد الیکشن نہیں جس پر سوالیہ نشان لگائے گئےہیں،دھاندلی کی شکایات پرکمیشن بنایاجائے اور جس کو جو بھی شکایتیں ہیں ان کا ازالہ کیا جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اب بیٹھ کر نیشنل ایجنڈہ طے کرنا ہے اس کے لیے ایک آزاد اور خود مختیار پارلیمنٹ،عدلیہ اور میڈیا ضروری ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ بلوچستان میں 5000 سے زائد مسنگ پرسنز ہیں جن کا رونا پانچ سال سے رو رہے ہیں،جب کہ میں خود 40 سال سے بھائی کی لاش تلاش کر رہا ہوں جو اب تک نہیں ملی۔

سردار اختر مینگل کا کہنا تھا کہ بلوچستان کو 70 سالوں سے پاکستان کے ساتھ چلانے کی کوشش نہیں کی گئی اب خدا کے لیے بلوچستان پر رحم کیا جائےان کا مزید کہنا تھا کہ میں ترقی کا مخالف نہیں مگر جس ترقی سے میری شناخت تبدیل ہو ایسی ترقی نہیں چاہیئے۔

بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ کا کہنا تھا کہ سی پیک کا بڑا چرچا کیا جا رہا ہےمگر آج گوادر میں پینے کا پانی نہیں،ایران سے آنے والی بجلی منقطع ہونے سے وہاں اب بجلی نہیں،گوادر میں چولہے لکڑیوں سے جل رہے ہیں،گوادر کے لوگ پانی،بجلی اور گیس کی سہولیات سے محروم ہیں،بلوچستان کی 18000 آسامیاں خالی پڑی ہیں مگر وہ اب تک پُر نہیں کی جا رہی جس کی وجہ سمجھ نہیں آرہی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube