پشاور: نامعلوم افراد نے خواجہ سرا کو بدترین تشدد کا نشانہ بنا کر قتل کردیا

August 17, 2018

پشاور میں ایک  اور خواجہ سرا کو نامعلوم افراد نے بدترین تشدد کے بعد قتل کر دیا۔ پولیس نے  2 مشتبہ افراد کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا ہے۔

تھانہ پشتخرہ کے اہلکار محمد حسین نے سما ڈجیٹل کو بتایا کہ باڑہ گیٹ کے علاقہ میں علاقہ مکینوں نے پولیس کو ایک تشدد زدہ لاش کی اطلاع دی۔

پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر لاش کو پہلے تھانہ منتقل کیا اور وہاں سے لیڈی ریڈنگ اسپتال منتقل کردیا۔ اسپتال میں مقتول کی شناخت خواجہ سرا ناصر عرف نازو کے نام سے ہوئی۔

پولیس کے مطابق خواجہ سرا ساجد عرف نازو کو باڑہ گیٹ کے علاقے میں اس کی رہائش گاہ پر قتل کیا گیا۔ نازو کی لاش پر تشدد کے نشانات بھی پائے گئے ہیں۔

پولیس نے قتل کے شبہ میں 2 افراد کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا۔ گرفتار افراد میں مقتول خواجہ سرا کا مالک مکان بھی شامل ہے۔

خواجہ سراؤں کے حقوق کے لیے سرگرم تنظیم ٹرانس ایکشن پاکستان نے نازو کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ 2015  سے اب تک خیبر پختونخوا میں 62 خواجہ سرا قتل ہوئے ہیں جبکہ صرف رواں برس خواجہ سراؤں پر تشدد کے 478 کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔

رواں ماہ کے آغاز میں بھی پشاور کے نواحی علاقے سربند میں نامعلوم افراد نے 3 خواجہ سراؤں کو خنجر کے وار سے زخمی کر دیا تھا۔ پولیس نے واقعہ میں ملوث 6 ملزمان کو گرفتار کیا تھا۔