امریکہ کے ساتھ تعلقات کو متوازن اور قابل اعتماد بنانا چاہتے ہیں ، عمران خان

Samaa Web Desk
August 9, 2018

متوقع وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان اور امریکہ کے تعلقات میں اتار چڑھاؤ کی بنیادی وجہ باہمی اعتماد کا فقدان ہے تاہم امریکا کے ساتھ تعلقات کو نہایت اہم سمجھتے ہوئے اعتماد پر مبنی تعلقات قائم کرنے کو تیار ہیں۔

پاکستان م،یں ہونے والے 25 جولائی کے انتخابات میں اکثریت کامیابی حاصل کرنے والی جماعت تحریک انصاف کے چیئرمین عمران نے گزشتہ روز امریکی سفیر جان ہوور سے اپنی ریہائش گاہ بنی میں ملاقات کی ، ملاقات میں عمران خان کا کہنا تھا کہ پاک امریکا تعلقات نے تاریخ میں کئی اتار چڑھاؤ دیکھے۔

عمران خان نے کہا ہے کہ تحریک انصاف امریکہ کے ساتھ اعتماد اور باہمی احترام پر مبنی تعلقات چاہتی ہے اور ان کی حکومت امریکہ کے ساتھ تعلقات کو مزید متوازن اور قابل بھروسہ بنائے گی۔

عمران خان نے کہا کہ ان تعلقات کو پاکستان اور امریکہ دونوں کے مفاد میں تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ افغانستان میں استحکام کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے چیئرمین تحریک انصاف نے زور دیا کہ افغانستان کے بحران کا سیاسی حل تلاش کیا جائے۔

تحریک انصاف کے جارہ کردہ اعلامیہ کے مطابق ملاقات کے دوران پاک امریکہ تعلقات، دوطرفہ تجارت اور افغانستان میں استحکام سمیت باہمی دلچسپی کے امور زیر غور لائے گئے۔

یاد رہے کہ رواں سال کے آغاز میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی ٹویٹ میں کہا تھا کہ امریکہ نے حماقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے پاکستان کو گزشتہ 15 سالوں کے دوران 33 ارب ڈالر کی خطیر مالی امداد دی ہے اور اس کے بدلے میں پاکستان نے جھوٹ اور دھوکے کے سوا کچھ نہیں دیا۔ پاکستان ہمارے لیڈرز کو احمق سمجھتا ہے۔

گزشتہ ماہ امریکہ کے وزیرِ خارجہ مائیک پومپیو نے کہا تھا کہ آئی ایم ایف پاکستان کی نئی حکومت کو کوئی ایسا بیل آؤٹ پیکج نہ دے جس کے فنڈز چین کا قرضہ ادا کرنے کے لیے استعمال کیے جائیں۔