ملک کو ایک تجربہ گاہ بنایا جا رہا ہے، سردار اختر مینگل

SAMAA | - Posted: Aug 3, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 3, 2018 | Last Updated: 3 years ago

بلوچستان نیشنل پارٹی کے قائد سردار اختر جان مینگل نے نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں میٹ دی پریس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کو ایک تجربہ گاہ بنایا جا رہا ہے ان تجربات کے نتائج بھیانک نکلنے کے باوجود بھی تواتر سے یہ تجربےجاری ہیں یہ تجربات تب رکیں گے جب ان کے سامنے کوئی کھڑا ہوگا مگر اب تک ایسا کوئی نہیں دکھ رہا، اس ملک کو نقصان اقتدار کی خاطر مصالحت کرنے والی پارٹیوں نے دیا ہے۔

سربراہ بی این پی کا کہنا تھا کہ ہم بلوچستان میں جہاں بھی الیکشن کمپین کے لیے گئے وہاں لوگوں نے پانی بجلی روزگار کے لیے نہیں بلکہ مسنگ پرسنز کی واپسی کے لیے درخواستیں دی، ہم نے اپنے ووٹرز کو اس بات کی یقین دہانی کروائی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اسلام آباد میں منڈی لگی ہے،یہ قطاریں ہر دور میں لگتی رہی ہے مگر ہماری پولیٹیکل کلاس آج تک سمجھ نہیں پائی کہ اقتدار اور اختیار میں فرق ہے۔ کچھ ریاستی ادروں کی غیر سیاسی اعمال کی  وجہ سے نفرتیں پیدا ہوئیں،اپنی 30 سالہ سیاسی کئرئیر میں ایسے الیکشن نہیں دیکھے،،دھاندلی کرانے کا گنیز ایوارڈ نگراں حکومت کو دیا جا نا چاہیئے،اس ملک میں صرف 1970 کے الیکشن ہی صاف اور شفاف تھے مگر کچھ نادیدہ قوتوں کے کندھے پر سوار جمہوری قوتوں نے اس الیکشن کو قبول نہ کر کے اپنے ساتھ ہی ناانصافی کی جس کا صلہ آج بھگت رہے ہیں اور اس الیکشن میں جو ہوا وہ سب کے سامنے ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے سی پیک کے حوالے سے ایک آل پارٹیز کانفرنس بلائی تھی اور اس میں کچھ نکات پر تمام پارٹیز نے اتفاق کیا تھا مگر آج تک ان میں سے کسی نکتے پر عملدارامد نہیں ہوا۔

 

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube