Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

عام انتخابات 2018میں سب سے زیادہ ووٹ مسترد ہوئے

SAMAA | - Posted: Aug 1, 2018 | Last Updated: 3 years ago
SAMAA |
Posted: Aug 1, 2018 | Last Updated: 3 years ago


پاکستان میں ہونے والے عام انتخابات کے اعداد و شمار دیکھے جائیں تو سال 2018 میں 1.6 ملین ووٹ مسترد کیے گئے، جو اب تک ملکی تاریخ میں ہونے والے انتخابات میں سب سے زیادہ ہیں۔

نیچے دیئے گئے اعداد و شمار کو دیکھا جائے تو اس سے قبل کسی بھی عام انتخابات میں مسترد شدہ ووٹوں کا تناسب اتنا زیادہ نہیں تھا۔ سال 1990 میں صرف 0.27 ملین ووٹس مسترد ہوئے۔ تاہم وقت کے ساتھ ساتھ یہ شرح آنے والے انتخابات میں بڑھتی چلی گئی۔ یہ ہی شرح سال 2013 کے عام انتخابات میں 1.5 ملین رہی۔

ان اعداد و شمار کو الگ الگ دیکھا جائے تو اس میں تضاد معلوم ہوتا ہے، تاہم ان مسترد ووٹوں کی تعداد بڑھنے کی ایک وجہ ملکی آبادی میں اضافہ بھی ہے۔ ووٹروں کی ٹرن آؤٹ شرح بھی ایک اثر انداز ہونے والا عامل  ہے۔

نیچے دی گئی تعداد انہیں عوامل کو پیش کر رہی ہے، ذیل میں دیا گیا چارٹ آپ کو ووٹ دینے والے افراد کی تعداد اور ٹرن آوٹ سطر ایکس ایکسز پر دکھائے گا، جب کہ وائے ایکسز پر مسترد شدہ ووٹوں کو دکھائے گا۔ گراف میں نظر آنے والا ہر ڈاٹ یہ ظاہر کرتا ہے کہ انتخابی سال میں قومی اسمبلی کے ہر حلقے سے کتنے فیصد ووٹ مسترد ہوئے۔

دو ہزار اٹھارہ تک، ہمیں صرف گیارہ حلقے نظر آتے ہیں جہاں پانچ فیصد سے زیادہ ووٹ مسترد ہوئے۔ لیکن یہ تعداد دوہزار تیرہ اور دو ہزار اٹھارہ کے انتخابات میں بڑھ جاتی ہے۔

دو ہزار تیرہ کے انتخابات میں مسترد ہونے والے ووٹوں کی تعداد پچھلے الیکشن کی نسبت دگنی، یعنی چوبیس حلقے، ہوجاتی ہے۔

دو ہزار اٹھارہ کے انتخابات میں یہ تعداد پچیس ہوگئی ہے۔

ہمیں نظر آتا ہے کہ ڈالے گئے ووٹوں کی تعداد بڑھتی ہے تو مسترد کیے گئے ووٹوں کی شرح میں بھی اضافہ ہوجاتا ہے۔ لیکن یہ رجحان ہمیں تمام حلقوں میں نظر آتا ہے۔

لیکن، اتنے زیادہ ووٹ مسترد کیوں ہوئے اور کیوں ہورہے ہیں؟ ان اعداد و شمار سے ہم تین وجوہات پیش کر سکتے ہیں۔
پہلی وجہ۔ سالوں بعد بھی، ہم ووٹرز کو تعلیم نہ دے سکے کہ ووٹ ڈالے کا صحیح طریقہ کیا ہے۔
دوسری وجہ۔ الیکشن کمیشن بیلٹ پیپرز کی بڑھتی ہوئی تعداد کے چیلنج سے عہدہ برا ہونے میں ناکام رہا ہے۔ یہ ہم اس لیے کہ رہے ہیں کہ مسترد ہونے والے ووٹوں کی تعداد ڈالے گئے ووٹوں کی مجموعی تعداد کے براہ راست تناسب میں ہے۔
تیسری وجہ۔ مسترد ہونے والے ووٹوں کی تعداد آبادی میں اضافے سے براہ راست تناسب میں ہے۔ آبادی میں جتنا اضافہ ہوتا ہے، اتنے شہری ووٹ دیتے ہیں اور اتنی ہی زیادہ غلطی کرتے ہیں جن کا نتیجے میں ووٹ غیر موثر ہوجاتے ہیں۔

بہت ساری سیاسی جماعتوں کا رونا ہے کہ اتنی بڑی تعداد میں ووٹ مسترد کیے گئے ہیں اور جیت کا مارجن مسترد ہونے والے ووٹوں سے کم رہا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube