نواز شریف کو پمز اسپتال سے واپس اڈیالہ جیل منتقل کردیا گیا

Samaa Web Desk
July 31, 2018

سابق وزیراعظم نواز شریف کو اسلام آباد کے پمز اسپتال سے واپس اڈیالہ جیل منتقل کردیا گیا ہے، دن بھر میں کیے گئے طبی معائنے ای سی جی، شوگر، بلڈ پریشر اور ای ٹی ٹی ٹیسٹ کی رپورٹ نارمل آئی تو میڈیکل بورڈ نے اپنی تسلی کے بعد مریض کو واپس جیل بھجوانے کی اجازت دے دی تھی۔

صدر مملکت ممنون حسین اسپتال میں نواز شریف سے ملاقات کے متمنی تھے تاہم سابق وزیراعظم کے اصرار پر انہیں فوری طور پر جیل منتقل کردیا گیا اور ممنون حسین نواز شریف سے ملاقات کرنے سے محروم رہے۔

پنجاب کے نگراں وزیرداخلہ شوکت جاوید نے خبررساں ایجنسی کو بتایاکہ ڈاکٹروں کے مشورے کے بعد سابق وزیراعظم نواز شریف کو واپس اڈیالہ جیل منتقل کیا جارہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف واپس جیل جانے چاہتے تھے کیونکہ وہ اسپتال کے کمرے میں چہل قدمی نہیں کرپارہے تھے۔

شوکت جاوید نے مزید بتایا کہ سابق وزیراعظم کو ان کی مرضی کے خلاف اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کو دو دن قبل طبعیت بگڑنے کے بعد اسلام آباد کے پمز اسپتال منتقل کیا گیا تھا، اسپتال میں نواز شریف کی موجودگی میں کارڈیک سینٹر کو سب جیل قرار دیا گیا تھا تاہم سخت سکیورٹی کے باعث دیگر مریض رلتے رہے ۔

واضح رہے سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو 13جولائی کو ایونفیلڈ پراپرٹیز کیس میں 10 اور 7 سال کی سزائیں سنائی گئیں تھیں، ان کی صاحبزادی مریم نواز بھی اڈیالہ جیل میں ہی بند ہیں۔

مریم نواز اور نواز شریف نے اپنی سزاوؤں کے خلاف ہائی کورٹ میں اپیل دائر کررکھی ہے جو کہ عدالت میں زیر سماعت ہے۔