Tuesday, January 25, 2022  | 21 Jamadilakhir, 1443

عام انتخابات: صوابی بظاہر تین جماعتوں میں تقسیم

SAMAA | - Posted: Jul 24, 2018 | Last Updated: 4 years ago
SAMAA |
Posted: Jul 24, 2018 | Last Updated: 4 years ago

خیبر پختونخوا کے ضلع صوابی میں تین بڑی جماعتوں تحریک انصاف، مسلم لیگ ن اور عوامی نیشنل پارٹی نے مضبوط ترین امیدوار میدان میں اتارے ہیں۔

این اے 18 سے تحریک انصاف کے امیدوار اسد قیصر کا مقابلہ مسلم لیگ ن کے سجاد احمد اور ایم ایم اے کے فضل علی سے ہوگا اور یہ دونوں اسد قیصر کو ٹف ٹائم دے سکتے ہیں۔

این اے 19 سے تحریک انصاف کے امیدوار عثمان خان، اے این پی کے وارث خان اور ایم ایم اے کے مولانا عطا الحق کے مابین مقابلہ ہوگا۔ ایم ایم اے اس حلقہ میں اے این پی کے ووٹ میں نقب لگائے گی جس کی بدولت تحریک انصاف کا راستہ ہموار ہوجائے گا۔

پی کے 43 پر مسلم لیگ ن کے محمد شیراز، ایم ایم کے سجاد خان اور تحریک انصاف کے رنگیز خان کے مابین مقابلہ ہوگا۔ رنگیز خان کو فیورٹ قرار دیا جارہا ہے۔

پی کے 44 پر اسد قیصر مضبوط ترین امیدوار تصور کیے جاتے ہیں تاہم مسلم لیگ ن کے بابر خان ان کو ٹف ٹائم دیں گے۔

پی کے 45 پر تحریک انصاف کے عبدالکریم خان فیورٹ تصور کیے جارہے ہیں تاہم اے این پی کے امجد علی ان کے پیروں تلے زمین گرما سکتے ہیں۔

پی کے 46 سے تحریک انصاف کے محمد علی ترکئی پہلی جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کت محمد ایاز مضبوط امیدوار مانے جاتے ہیں۔

پی کے 47 سے شہرام ترکئی تحریک انصاف کے ٹکٹ ہولڈر ہیں۔ ان کی پوزیشن بہت مضبوط ہیں تاہم اے این پی کے امیر رحمان ان کو ٹف ٹائم دے سکتے ہیں جبکہ اس حلقے میں ن لیگ کے اعجاز اکرم بھی ہاتھ پیر مار رہے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube