عام انتخابات: دیر بالا میں جماعت اسلامی کی بھاری شخصیات فیورٹ قرار

Muhammad Irfan
July 23, 2018
 

دیر پائین کی طرح دیر بالا بھی جماعت اسلامی کا مضبوط گڑھ ہے اور یہاں سے جماعت اسلامی نے متحدہ مجلس عمل کے پلیٹ فارم سے بھاری شخصیات کو ٹکٹ دیے ہیں۔

دیر بالا سے قومی اسمبلی کی ایک اور صوبائی اسمبلی کی 3 نشستیں ہیں۔ قومی اسمبلی کی نشست پر ایم ایم اے کے امیدوار صاحبزادہ طارق اللہ اور تحریک انصاف کے صاحبزادہ صبغت اللہ کے مابین کانٹے کا مقابلہ ہوگا۔ یہ دونوں آپس میں چچا زاد بھائی ہیں اور صبغت اللہ بھی حال ہی میں جماعت اسلامی چھوڑ کر تحریک انصاف میں شامل ہوئے ہیں۔ یہاں سے پیپلز پارٹی کے نجم الدین خان بھی میدان میں ہیں۔ حالات کسی بھی وقت پلٹا کھا کر نجم الدین خان کے حق میں سازگار ہوسکتے ہیں۔

پی کے 10 پر ایم ایم اے کے امیدوار محمد علی کو پیپلز پارٹی کے امیدوار ملک بادشاہ صالح اور نصف درجن آزاد امیدواروں کا سامنا ہے۔

پی کے 11 پر ایم ایم اے کے اعظم خان مضبوط ترین امیدوار تصور کیے جاتے ہیں تاہم پیپلز پارٹی کے صاحبزادہ ثنا اللہ ان کو ٹف ٹائم دے سکتے ہیں۔

پی کے 12 پر ایم ایم اے کے عنایت اللہ خان میدان میں ہیں۔ جو سب سے زیادہ مقبول اور ان کا ذاتی ووٹ بینک بھی بہت زیادہ ہے۔ اس حلقے پر اگر عنایت اللہ خان کو کوئی ٹف ٹائم دے سکتے ہیں تو وہ پیپلز پارٹی کے نجم الدین خان ہیں جو این اے 5 کے ساتھ یہاں سے بھی الیکشن میں حصہ لے رہے ہیں۔