کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کا نام بلیک لسٹ میں شامل

Samaa Web Desk
July 7, 2018

کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کا نام بلیک لسٹ میں شامل کردیا گیا۔ بلیک لسٹ میں نام شامل ہونے کے بعد کیپٹن صفدر کے بیرون ملک جانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ واضح رہے کہ نیب کی استدعا پر وزارت داخلہ کی جانب سے کیپٹن صفدر کا نام ممکنہ فرار کی کوشش ناکام بنانے کیلئے شامل کیا گیا ہے۔

نیب ذرائع کے مطابق کیپٹن صفدر کو ملک سے فرار ہونے سے روکنے کیلئے ان کا نام بلیک لسٹ میں شامل کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ ایون فیلڈ ریفرنس کیس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد کو ایک سال قید با مشقت کی سزا سنائی گئی ہے۔ نیب پراسیکیوٹر کے مطابق کیپٹن (ر) محمد صفدر کو ایون فیلڈ ریفرنس سے متعلق تحقیقات میں نیب کے ساتھ تعاون نہ کرنے پر سزا سنائی گئی ہے۔

 

کیپٹن صفدر کی گرفتاری پر تجزیہ دیتے ہوئے سماء اسلام آباد کے بیورو چیف خالد عظیم کا کہنا تھا کہ کپٹن صفدر کا نام بلیک لسٹ میں شامل کرنا بڑا اقدام ہے، محمد صفدر کیخلاف باضابطہ کارروائی شروع کرنے کیلئے بیرون ملک جانے سے روکنا ضروری تھا۔

 

خالد عظیم کے مطابق ہم یہ کہہ سکتے ہیں کہ محمد صفدر کا نام بلیک لسٹ میں شامل کرنے کا مقصد یہ ہے کہ نیب مکمل طور پر ان کی گرفتاری کیلئے متحرک ہوچکی ہے۔ تاہم گرفتاری کے بعد بلیک لسٹ یا ای سی ایل میں نام ڈالے رکھنے کی کوئی ضرورت نہیں ہوگی۔

 

نیب نے نواز شریف اور دیگر کی گرفتاری کیلئے حکمت عملی مرتب کرتے ہوئے عدالت سے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کے وارنٹ گرفتاری جلد جاری کرنے کی استدعا کی گئی ہے۔ قومی احتساب بیورو نے نواز شریف اور ان کے بچوں کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کے لئے بھی وزارت داخلہ کو خط لکھ دیا۔

 

دوسری جانب نیب نے ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے کی تصدیق شدہ کاپی بھی حاصل کرلی ہے۔ کیپٹن صفدر کی گرفتاری سے متعلق  ڈی آئی جی کا کہنا ہے کہ کپٹن صفدر کی گرفتاری کے تحریری احکامات موصول نہیں ہوئے، تحریری احکامات موصول ہوتے ہی گرفتاری عمل میں لائی جائے گی۔